’فلموں میں بولڈ سین سے پرہیز نہیں‘

Image caption فلم’پارچڈ‘ میں رادھیکا کےبولڈ سین خوب سرخیاں بٹور رہے ہیں

بالی ووڈ اداکارہ داکارہ رادھکا اپٹے کا کہنا ہے کہ انہیں فلموں میں بولڈ سین کرنے سے کوئی پرہیز نہیں ہے۔

فلمساز رادھکا کی تقریباً ہر فلم میں ایک بولڈ سین ضرور رکھتے ہیں۔

لیکن حقیقت یہ ہے کہ رادھیکا صرف فلموں میں ہی بولڈ نظر نہیں آتی ہیں، ان کی سوچ بھی کافی بولڈ ہے.

ان دنوں فلم’پارچڈ‘ میں رادھیکا کے بولڈ سین خوب سرخیاں بٹور رہے ہیں۔

اس بارے میں رادھیکا کہتی ہیں،’اس فلم کے بولڈ سین میں میں نے اپنی حدود کو توڑا ہے مجھے لگتا ہے کہ ہر آدمی ایک دوسرے کے جسم کو دیکھنے کے لیے تیار ہے اور بھارت کے لوگوں کو ایسے مناظر کو دیکھنے کی ضرورت بھی ہے ہم نے ’کاما سوتر‘ جیسی فلمیں بنائی ہیں، ہمیں تو ایسے سوالوں سے بھی بچنا چاہیے، ہمیں اس سوچ سے اوپر اٹھنا چاہیے. جب لوگ دیکھنے کے لیے تیار ہیں ، تو ہم دکھاتے ہیں۔‘

Image caption رادھیکا کے خیال میں فلم پارچڈ میں انہوں نے تمام حدود کو توڑ دیا ہے

ان کا کہنا ہے ’میں نے بھارت سے لے کر بیرون ملک تک سٹیج پر لوگوں کو بولڈ سین کرتے ہوئے دیکھا ہے مجھے سمجھ میں نہیں آتا کہ مجھے اپنے جسم سے شرم کیوں آنی چاہیے؟ یہی ایک ایسا ذریعہ ہے جسے میں ایک فنکار کے طور پر استعمال کر سکتی ہوں مجھے فلموں میں بولڈ سین کرنے سے نہ کوئی پرہیز ہے اور نہ پریشانی مجھے ان سب سے کوئی ہچکچاہٹ نہیں ہے‘۔

فلم پارچڈ پر بی بی سی سے بات کرتے ہوئے رادھیکا کا کہنا تھا کہ ’میرے لیے ’پارچڈ‘ ایک ایسی آزادی ہے جس میں کسی بھی طرح کا کوئی پچھتاوا اور بوجھ نہ ہو‘۔ ابھی کچھ وقت پہلے ہی ’پارچڈ‘ فلم میں فلمائے گئے رادھیکا اور عادل حسین کے بولڈ سین لیک ہو گئے تھے۔

Image caption رادھیکا عام زندگی میں بھی اپنے بولڈ خیالات کے لیے مشہور ہیں

اس بارے میں رادھیکا کا کہنا ہے،’مجھے اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا میرے لیے جو ضروری ہے وہ کام میں کرتی رہوں گی‘۔

خواتین وزیر فلموں میں نظر آنے والی رادھکا کہتی ہیں، ’اس کی وجہ یہی ہے کہ مجھے کچھ اسی طرح کے رول زیادہ پیشکش ہوتے ہیں لیکن ان میں سے بھی مجھے جس فلم کی کہانی اور کردار پسند آتا ہے میں وہی کرتی ہوں. میرے لیے کام کرنے سے ملی خوشی ہی سب سے بڑی چیز ہے.۔‘

متعلقہ عنوانات