’دودھ نہ نکالنے پر گائے بیمار ہو جاتی ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

سمجھے کہ نہیں!

آج دن بھر ٹوئٹر پر خبروں پر ہونے والی نوک جھونک شائد آپ کی نظر سے گزری ہے یا نہیں؟

تو ہوا یوں کہ انڈیا میں لالو پرساد یادو نے، جو کہ انڈیا کی ریاست بہار کے وزیر اعلیٰ اور انڈین ریلوے کے وزیر رہ چکے ہیں، آج ایک ٹویٹ میں انڈین ریلوے کو درپیش اقتصادی مسائل کے بارے میں خدشات کا اظہار کیا اور کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ اس کے بارے میں دوبارہ سوچا جائے۔

ویسے تو بات وہیں ختم ہو جانی چاہیے تھی، مگر یہ ٹوئٹر ہے، یہاں بات اتنی آسانی سے ختم کہاں ہوتی ہے؟

جواب میں بی جے پی کے سیاست دان اور بہار کے موجودہ وزیر خزانہ سوشیل کمار مودی نے ٹویٹ کیا کہ 'آپ نے تو ریلویز میں سے ویسے دودھ نکالا جیسے گائے سے نکالا جاتا ہے، مگر مودی جی ریلویز کو آپ سے بہتر سمجھتے ہیں کیونکہ انھوں نے ریلویز پلیٹ فارمز پر دودھ والی چائے بیچی ہے!‘

اب جواب دیے بغیر لالو پرساد یادو بات ختم کر دیں، ایسا کیسے ہوسکتا؟

انھوں نے جواب میں لکھا، 'یہ کیا عجیب منطق ہے! گائے سے دودھ نہ نکالا جائے تو جانتے ہیں کیا ہوتا ہے؟ گائے بیمار ہو جاتی ہے، اور اس وقت یہی ہو رہا ہے۔ سمجھے کہ نہیں۔'

آپ کو یاد ہے ناں کہ لالو پرساد یادو کو سنہ 2013 میں، 1996 کے 'چارہ گھپلے' میں سزا ہوئی تھی۔

خیر کچھ بھی ہو، لالو پرساد یادو کا انداز پہلے بھی انوکھا تھا، اور اب بھی ہے۔

اسی بارے میں