ممبئی میں بارش، ٹرانسپورٹ کا نظام متاثر

People help a woman to move her car through a water-logged road during rains in Mumbai, August 29, 2017 تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption لوگ پانی میں پھنسی گاڑی نکلنے کی کوشش کر رہے ہیں

انڈیا کے کاروباری شہر ممبئی میں مون سون کی شدید بارشوں کے بعد شہر میں ٹرانسپورٹ کا نظام درہم برہم ہو گیا۔

شہر کی سڑکیں پانی میں ڈوب گئی ہیں اور حکام نے عوام کو گھروں میں رہنے کی تاکید کی ہے۔

امدادی کارکنوں کے مطابق جنوبی ایشیا میں مون سون کے بعد حالیہ بارشوں سے ایک کروڑ 60 لاکھ افراد متاثر ہوئے ہیں جبکہ نیپال اور بنگلہ دیش میں بارشوں سے 500 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

منگل کو ممبئی میں ہونے والی بارش کے بعد ٹرینوں کا نظام معطل ہو گیا ہے اور کئی پروازیں منسوخ ہوئی ہیں۔ شہر بھر میں سکول بند پڑے ہیں۔

بارش کے بعد پانی ایک ہسپتال میں بھی بھر گیا جس کے بعد بچوں کے امراض کا ایک وارڈ خالی کروانا پڑا۔

بارش کے پانی میں پھنسے شہری مدد کے لیے سوشل میڈیا استعمال کر رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پانی میں پھنسے افرا سوشل میڈیا کے ذریعے مدد طلب کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ اس سے پہلے ممبئی میں سنہ 2005 میں شدید بارشوں کے بعد سیلاب آیا تھا جس میں 500 سے زیادہ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

محکمۃ موسمیات کا کہنا ہے کہ شہر میں آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران مزید بارش کا امکان ہے۔

ممبئی میں موجود بی بی سی کی سرانجانہ تیواری کا کہنا ہے کہ شہر میں سیلابی پانی جمع ہونے کی وجہ ساحلی پٹی پر ہونے والی تعمیرات اور پلاسٹک کی وجہ نکاسی آب کے نالوں کا بند ہونا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پانی میں ڈوبی ایک مسافر بس

بین الاقوامی امدادی تنظیم آئی ایف آر سی کا کہنا ہے کہ حالیہ کچھ برسوں میں سیلاب جنوبی ایشیا میں بند ترین انسانی بحرانوں کی وجہ بنے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption بارش کی وجہ سے شہر میں ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں