بھوپال میں سماجی کارکن کا قتل

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پولیس کا کہنا ہے کہ وہ قتل کی اس واردات کی تحقیقات کر رہی ہے۔

بھارتی پولیس کا کہنا ہے کہ معلومات کے حصول کے حق کے لیے سرگرم سماجی کارکن شہلا مسعود کو بھوپال میں گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ہے۔

حکام کے مطابق شہلا کی لاش ان کے گھر کے باہر کھڑی گاڑی سے ملی ہے۔ وہ شہر میں بدعنوانی کے خلاف منعقدہ مظاہرے میں شرکت کے لیے جانے والی تھیں کہ نامعلوم مسلح شخص نے انہیں گولی مار دی۔

بھارت میں سنہ 2008 سے اب تک معلومات کے حصول کے حق کے لیے سرگرم بارہ کے قریب کارکن مارے جا چکے ہیں۔

معلومات کے حصول کا قانون بھارتی شہریوں کو یہ حق دیتا ہے کہ وہ ان معلومات تک رسائی پائیں جو حکومت نے ظاہر نہیں کی ہیں۔

شہلا مسعود نے جو ایک ایونٹ مینجمنٹ کمپنی بھی چلاتی تھیں، معلومات کے حصول کی کئی درخواستیں دائر کی ہوئی تھیں جن میں سے متعدد جنگلی حیات کے تحفظ کے بارے میں تھیں۔

اطلاعات کے مطابق گزشتہ برس انہوں نے حکام کو مطلع کیا تھا کہ ان کی جان کو خطرہ ہے اور اس سلسلے میں انہوں نے پولیس کے پاس شکایت بھی درج کروائی تھی۔

بھوپال پولیس کا کہنا ہے کہ وہ قتل کی اس واردات کی تحقیقات کر رہی ہے۔

اسی بارے میں