’مایا وتی پر وزیراعظم بننے کی دھن سوار‘

Image caption مایا وتی کے ناقدین ان پر ذاتی تشہیر و ترویج کا الزام لگاتے ہیں

وکی لیکس پر شائع کیے جانے والے امریکی سفارتی مراسلوں میں بھارتی ریاست اتر پردیش کی وزیراعلٰی مایاوتی کو ایسی ’انتہائی مغرور‘ خاتون قرار دیا گیا ہے جن پر وزیراعظم بننے کی دھن سوار ہے۔

مایا وتی بھارت میں نچلی دلت ذات کے کروڑوں افراد کی نمائندہ سمجھی جاتی ہیں تاہم سنہ 2007 سے سنہ 2009 کے درمیان بھیجے گئے پیغامات میں مایا وتی کے بارے میں کئی ایسی معلومات دی گئی ہیں جن کے بارے میں عوام نہیں جانتے۔

وکی لیکس کے مطابق تیئیس اکتوبر سنہ دو ہزار آٹھ کو کو بھیجے گئے ایک خفیہ سفارتی مراسلے میں کہا گیا ہے، ’جب انہیں (مایا وتی کو) نئے سینڈلز کی ضرورت تھی تو ان کا نجی طیارہ خالی ممبئی بھیجا گیا تاکہ وہ ان کے پسندیدہ برانڈ کا سینڈل لا سکے‘۔

ان پیغامات پر ابھی مایا وتی یا اترپردیش حکومت کی جانب سے کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

پیغامات میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ مایا وتی اپنی سکیورٹی کے حوالے سے بہت حساس ہیں اور انہوں نے اپنا کھانا چكھنے کے لیے بھی لوگ ملازم رکھے ہوئے ہیں تاکہ انہیں کوئی زہر نہ دے سکے۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پي کے مطابق مایاوتی کی ’سنک ، جھک اور عدم تحفظ کے جذبے‘ کا تجزیہ کرنے والے پیغام میں کہا گیا ہے، ’انہوں نے اپنے گھر سے اپنے دفتر تک ایک ذاتی سڑک تعمیر کروائی ہے اور جب بھی ان کی گاڑیوں کا قافلہ وہاں سے گزرتا ہے، تو فوری طور پر اس کی صفائی کی جاتی ہے‘۔

ان سفارتی پیغامات میں امریکی حکام نے مایاوتی کے پیسے جمع کرنے کا بھی ذکر کیا ہے۔ ایک پیغام میں کہا گیا ہے کہ مایا وتی ہر سال اپنی سالگرہ مناتي ہیں جس میں انہیں ’خوشامدی پارٹی ارکان اور نوکر شاہی کی جانب سے لاکھوں روپے ملتے ہیں اور افسران میں انہیں کیک کھلانے کے لیے مقابلہ ہوتا ہے‘۔

مایا وتی پر ماضی میں ریاست کے مختلف شہروں میں اپنے قدآور مجسمے نصب کروانے پر تنقید کی جاتی رہی ہے۔ بھارت میں عموماً سیاستدانوں کے مجسمے ان کی وفات کے بعد ہی نصب کیے جاتے ہیں لیکن مایا وتی کا کہنا ہے کہ یہ ایک پرانی سوچ ہے۔

گزشتہ برس وہ اس وقت بھی خبروں میں آئی تھیں جب لکھنؤ میں ایک ریلی میں ان کا استقبال ایک روپوں سے بنے بہت بڑے ہار سے کیا گیا تھا۔ جو ہار انہیں پیش کیا گیا وہ ایک ہزار روپے کے نوٹوں سے بنایا گیا تھا اور کئی میٹر لمبا تھا۔ کہا گیا تھا کہ اس ہار میں تقریبا دس سے بیس کروڑ روپے تک کا استعمال کیا گیا تھا۔

مایا وتی کے ناقدین ان پر ذاتی تشہیر اور ترویج کا الزام لگاتے ہیں جبکہ مایاوتی کا کہنا ہے کہ یہ ان کے خلاف سازش کا حصہ ہے۔

اسی بارے میں