سب سے سستے ٹیبلیٹ کمپیوٹر کا افتتاح

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption حکومت نے اس کی قیمت پر خصوصی رعایت کا اعلان کیا ہے

بھارت دنیا کی سب سے سستی کار نینیو پہلے ہی بنا چکا ہے اور آج دنیا کا سب سے سستا ٹیبلٹ کمپیوٹر ’ آکاش‘ بھی دلی میں لانچ کیا گیا ہے۔

کہا جا رہا ہے کہ اس کی قیمت پندرہ سو سے بائیس سو روپے کے درمیان رہےگی جبکہ اس کی بنانے کی قیمت اس سے کہیں زیادہ ہے۔

حکومت انہیں اپنے ان غریب طلباء کے لیے تیار کروا رہی ہے جو دور دراز دیہی علاقوں میں رہتے ہیں تاکہ وہ حکومت کی جانب سے مہیا کیاگیا اپنا تعلیمی مواد کمپیوٹر پر ڈاؤن لوڈ کر سکیں۔

انہیں دور دراز اور دیہی علاقے کے سکولوں میں نصب کیا جائیگا تاکہ بچوں کو دیگر تعلیم کے ساتھ ساتھ کمپیوٹر کی بھی بنیادی تعلیم دی جا سکے۔

بھارتی بازار میں آئی پیڈ بہت سے ہیں اور ایئر ٹیل اور ریلائنس جیسی بھارتی کمپنیوں کے بہت سے ٹیبلٹ بھی دستیاب ہیں لیکن آکاش ٹیبلٹ کو بھارت کے معروف آئی ٹی انسٹیٹیوٹ نے تیار کیا ہے۔

بڑے پیمانے پر اس کی تیاری کے لیے بھارتی حکومت نے مختلف کمپنیوں سے ٹینڈر طلب کیے تھے لیکن بھارتی کمپنیوں نے اتنی کم قیمت پر اس کے بنانے پر جب مجبوری ظاہر کی تو ایک بیرونی کمپنی ڈیٹاونڈ نے اس کا بیڑا اٹھایا ہے۔

اسے بھارت میں اسمبیل کیا جائیگا اور حکومت کی طرف سے اس کی قیمت میں خصوصی رعایت دی جائیگی۔ اطلاعات ہیں کہ تعلیم کی ترویج و ترقی کے لیے وزارت تعلیم کی طرف سے یہ ایک بڑی سکیم کا حصہ ہے۔

بعض ماہرین کے مطابق طلباء کو ہر برس اپنی تعلیمی سرگرمیوں کے لیے کتابوں پر بہت سے پیسے خرچ کرنے ہوتے ہیں اور اس ٹیبلٹ کمپیوٹر پر وہ سارا مواد حاصل کر سکیں گے۔

اس میں وہ تمام تکنیکی سہولیات مہیا کی جائیں گی جو کسی بھی عام کمپیوٹر میں ہوتی ہیں تاکہ اسے ہر لحاظ سےاستعمال کیا جاسکے۔ لیکن تکنیکی ماہرین کا کہنا ہے اس ٹیبلیٹ کمپیوٹر میں جو فیچرز ہیں ان کے مطابق ڈاؤن لوڈنگ کا عمل آسان نہیں ہوگا۔

ماہرین کے مطابق بھارت میں انٹرنیٹ کی سپیڈ عام طور پر بہت سست رہتی ہے اور دیہی علاقوں میں تو اس کا برا حال ہے۔ ان کے مطابق اس مذکورہ کمپیوٹر کی ہارڈ ڈسک اور ریم بہت کم ہے جس سے ڈاؤن لوڈنگ آسان نہیں ہوگی۔

ایک اور مشکل یہ ہے کہ دیہی علاقوں کے بیشتر کالج اور سکولوں میں انٹرنیٹ کی سہولیت مہیا بھی نہیں ہے۔ لیکن سرکاری حکام کا کہنا ہے کہ وائرلیس انٹرنیٹ اور خصوصی لائینیں مہیا کر کے ان خامیوں کو دور کیا جائیگا۔

اسی بارے میں