سنجیو بھٹ ضمانت: حکومتی درخواست مسترد

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

بھارت کی ریاست گجرات میں ایک ذیلی عدالت نے ریاستی حکومت کی وہ درخواست مسترد کر دی ہے جس میں کہا گیا تھا کہ وزیر اعلی نریندر مودی کے خلاف بیان دینے والے پولیس افسرسنجیو بھٹ کی ضمانت کی درخواست کی سماعت نہ کی جائے۔

ریاستی حکومت نے ضمانت کی یہ کہہ کر مخالفت کی تھی کہ چونکہ پولیس نے مسٹر بھٹ کو تحویل میں لینے کے لیے ایک دیگر عدالت میں عرضی داخل کی ہے اس لیے ریمانڈ کی درخواست پر فیصلہ ہونے تک ان کی ضمانت کی درخواست پر غور نہ کیا جائے ۔

گجرات، پولیس افسرکو ضمانت کی مشروط پیشکش

تاہم سیشن عدالت نے حکومت کی درخواست مسترد کرتے ہوئے سنجیو بھٹ کی ضمانت کی درخواست کی سماعت شروع کر دی ہے۔ سماعت بدھ کو نامکمل رہی اور جمعرات کو تعطیل ہے ۔اس لیے اس درخواست کا فیصلہ اب جمعہ کو آنے کی توقع ہے۔تب تک سنجیو جیل میں رہیں گے۔

دلی سے نامہ نگار شکیل اختر کے مطابق منگل کو پرنسپل ڈسٹرکٹ جج نے پولیس کی جانب سے ریمانڈ کی درخواست کی سماعت کرتے ہوئے سنجیو بھٹ کو ’سمجھوتے‘ کا یہ غیر معمولی فارمولہ دیا تھا کہ اگر وہ تین چار گھنٹے کے لیے پولیس کی ریمانڈ میں جانے کے لیے آمادہ ہو جائیں اور ان کے سارے سوالوں کا جواب دے دیں تو شام میں انہیں ضمانت پر رہا کیا جا سکتا ہے۔ لیکن سنجیو نے اس پیشکش کو قطعی طور پر مسترد کرتے ہو ئے کہا تھا کہ یہ اُصولوں کی لڑائی ہے۔

انہوں نے جج سے کہا تھا ’اگر آپ عدالتی فیصلہ دیں تو میں چودہ دن کے لیے پولیس کی تحویل میں جانے کے لیے تیار ہوں لیکن میں سمجھوتہ کر کے چار منٹ کے لیے بھی تحویل میں جانے کے لیے تیار نہیں ہو۔ میں جھوٹ بولنے والوں اور مجرموں سے کوئی سمجھوتہ نہیں کروں گا۔‘

سنجیو بھٹ کو گجرات پولیس نے 30 ستمبر کو اپنے ایک ماتحت کو وزیراعلی نریندر مودی کے خلاف گواہی دینے پر مبینہ طور پر مجبور کرنے کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔

اعلی پولیس افسر سنجیو بھٹ نے سپریم کورٹ میں داخل کیے گئے ایک بیان حلفی میں الزام لگایا ہے کہ مسٹر مودی نے 2002 کے فسادات کے دوران اعلی افسروں سے کہا تھا کہ وہ ہندوؤوں کو مسلمانوں کے خلاف اپنا غصہ نکالنے دیں اور انہیں نہ روکیں ۔مسٹر مودی نے اس کی تردید کی ہے ۔

وزیر اعلی کے خلاف الزام عائد کیے جانے کے بعد سنجیو بھٹ بے ضابطگی کے ایک معاملے میں معطل کر دیے گئے اور بعد میں انہیں کے ایک ماتحت نے ان کے خلاف چھوٹا بیان دلانے کے لیے مبجور کرنے کا الزام لگاتے ہوئے ان کے خلاف پولیس میں شکایت درج کرائی ۔

سنجیو بھٹ کی اہلیہ نے مرکزی حکومت سے مسٹر بھٹ اور اپنے لیے تحفط فراہم کرنے کی درخواست کی ہے۔

اسی بارے میں