ایکسپریس ٹرین میں آگ لگنے سے سات افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ریل کے ایئر کنڈیشن ڈبوں میں آگ لگي تھی

بھارت میں ریل حکام کا کہنا ہے کہ منگل کی صبح ہاؤڑا دہرہ دون ایکسپریس ٹرین کے دو ایئرکنڈیشنڈ ڈبوں میں آگ لگنے کے سبب کم سے کم سات افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق ایک درجن سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں سے بعض کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے مسافروں میں ایک خاتون اور ان کی چار برس کی ایک بچی بھی شامل ہے۔

ریل حکام کے مطابق زخمی ہونے والوں میں روس کی شہری تین لڑکیاں بھی ہیں جو ہاؤڑا سے دہرہ دون جا رہی تھیں۔

دھنباد کے سینیئر پولیس افسر امول ہونکر نے اس حادثہ میں سات افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی ہے۔

علاقے میں بی بی سی کے نامہ نگار سلمان راوی کے مطابق ریل حکام کا کہنا ہے کہ ہلاکتوں میں اضافہ بھی ہوسکتا ہے۔

ریل حکام کے مطابق ریاست جھارکھنڈ کے دھنباد ڈیویژن میں پارس ناتھ اور نمیاگھاٹ سٹیشنوں کے درمیان اگ لگنے کا واقعہ پیش آيا ہے۔

یہ واقعہ رات کے تقریبا ڈھائی بجے پیش آيا جب مسافر گہری نیند میں سو رہے تھے۔ پہلے آگ بی ون ڈبّے میں لگی بعد میں یہ بی ٹو تک پھیل گئي۔

ریل حکام کا کہنا ہے کہ آگ لگنے کی وجہ کے بارے میں ابھی نہیں پتہ چل سکا ہے اور اس کے تمام پہلوؤں کی جانچ کے احکامات دیےگئے ہیں۔

مسافروں کا کہنا ہے کہ کوچ میں آہستہ آہستہ دھواں بھرنے لگا اور پھر آگ لگ گئي۔ چونکہ بیشتر مسافر سو رہے تھے اس لیے زیادہ تر کو اس کے متعلق پتہ ہی نہیں چل سکا۔

اسی بارے میں