اسرائیل یو این میں بھارت کی رکنیت کاحامی

Image caption بھارتی وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا اسرائیل کے درہ پر ہیں

اسرائيل کا کہنا ہے کہ بھارت دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہے اور وہ چاہتا ہے کہ بھارت اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا مستقل رکن ہو جائے۔

یہ بات اسرائيل کے صدر شمعون پیریز نے تیل ابیب میں بھارتی وزیر خارجہ کا استقبال کرتے ہوئے کہی ہے۔

بھارت کے وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا آج کل اسرائیل کے دورے پر ہیں۔ گزشتہ گیارہ برسوں میں بھارت کی جانب سے کسی بھی وزیر خارجہ کا اسرائیل کا یہ پہلا دورہ ہے۔

گزشتہ رات بھارتی وزیر خارجہ کی آمد کے موقع پر اسرائیل کے صدر شمعون پیریز نے کہا تیل ابیب بھارت کو بڑی احتیاط اور دلچسپی سے دیکھتا رہا ہے۔

’ہمارے لیے بھارت ایک ثقافت پہلے ہے اور پھر وہ دنیا کی ایک سب سے بڑی جمہوریت ہے۔‘

اقوام متحدہ میں بھارت کے موقف کی حمایت کرتے ہوئے انہوں نے کہا ’میری خواہش ہے کہ بھارت سکیورٹی کونسل کی مستقل رکنیت حاصل کر سکے۔‘

اس کے جواب میں بھارتی وزیر خارجہ ایس کرشنا نے اسرائیل کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ خوراک کے معاملے میں اسرائیل خود کفیل ہے اور یہ بھارت کے لیے ایک مثال ہے۔

مسٹر کرشنا نے کہا ’اب وقت آ پہنچا ہے کہ دونوں ملکوں کے رہنما ترقی کی غرض سے آئندہ عشرے کے لیے اپنا ایک ایجنڈا متعین کریں اور اسی کے لیے میں یہاں آیا ہوا ہوں۔‘

انہوں نے کہا کہ بھارت اور اسرائیل کے درمیان طویل عرصے سے جاری دوستی سے وہ بہت خوش ہیں۔

ایس ایم کرشنا تیل ابیب میں مختلف اسرائیلی رہنماؤں سے ملاقات کر رہے ہیں اور امکان ہے دونوں ملک دفاع، سکیورٹی، ذراعت، سائنس اور ٹیکنالوجی جیسے شعبوں میں تعاون اور سمجھوتوں کے معاہدوں کے متعلق بات کریں گے۔

اسی بارے میں