جنگی طیارے:فرانسیسی فرم کی بولی سب سے کم

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters (audio)
Image caption یہ دنیا کے چند بڑے دفاعی سودوں میں سے ایک ہے

بھارتی فضائیہ کو جنگی طیاروں کی فراہمی کے دس ارب ڈالر کے معاہدے کے لیے سب سے کم بولی فرانسیسی فرم دیسالت نے دی ہے۔

اب دیسالت ایوی ایشن اور بھارتی حکومت کے مابین حمتی مذاکرات ہوں گے جس کے بعد ہی بھارت کو ایک سو چھبیس رافیل طیاروں کی فراہمی کا معاہدہ ممکن ہو سکے گا۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ یہ دنیا کے چند بڑے دفاعی سودوں میں سے ایک ہے اور اسے جنگی طیارے بنانے والی کمپنی یورو فائٹر کے لیے ایک دھچکا قرار دیا جا رہا ہے۔

یورور فائٹر دسمبر میں جاپان کو جنگی طیاروں کی فراہمی کا آٹھ ارب ڈالر کا آرڈر بھی حاصل نہیں کر سکی تھی۔

نئی دلّی میں برطانوی ہائی کمیشن کے حکام کا کہنا ہے کہ یہ خبر ان کے لیے مایوس کن ہے اور اب وہ اس کی تفصیلات کے بارے میں معلومات حاصل کریں گے۔

ہائی کمیشن کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ’یہ واضح کیا گیا ہے کہ معاملہ معاہدے کی مالیت کا تھا اور یہ بھارت اور دیگر ممالک کے باہمی تعلقات کا عکاس نہیں۔‘

برطانوی حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہ بات بھی باعثِ تعجب نہیں ہوگی کہ اگر بھارت یہ فیصلہ کرے کہ رافیل جہاز اس کے لیے صحیح آپشن نہیں۔

حکام کے مطابق ان کا ماننا ہے کہ ’یورو فائٹر کمپنی کا جنگی جہاز ٹائیفون میں حال اور مستقبل دونوں کے لیے بہترین صلاحیت موجود ہے۔‘

اسی بارے میں