یوپی میں تیسرے مرحلے کی پولنگ مکمل

Image caption لوگ بڑی تعداد میں ووٹ ڈالنے کے لیے پولبگ مراکز پہنچے۔

بھارت کی ریاست اترپردیش میں اسمبلی انتخابات کے لیے بدھ کے روز تیسرے مرحلے کی پولنگ مکمل ہو گئی ہے۔ اس مرحلے میں کل چھپّن نشستوں کے لیے ووٹ ڈالے گئے۔

تیسرے مرحلے میں گاندھی خاندان کے اثر و رسوخ والے علاقے امیٹھی اور سلطان پور جیسے اضلاع میں بھی انتخابات ہوئے ہیں جہاں راہول گاندھی کی بہن پرینکا گاندھی نے زبردست انتخابی مہم چلائی تھی۔

اس کے علاوہ کوشامبھی، الٰہ آباد، جون پور، بنارس، سنت کبیر نگر، مرزا پور، چندولی اور سون بھدر جیسے اضلاع کی اسبملی سیٹوں پر انتخابات ہوئے ہیں۔

پولنگ کے لیے سخت سکیورٹی انتظامات کیے گئے اور بعض حساس علاقوں میں نیم فوجی دستوں کو تعینات کیا گيا۔

چندولی اور سون بھدر کے کئی علاقوں میں ماؤ نواز باغیوں کا اثر ہے اس لیے وہاں کے پولنگ مراکز اور دور دراز کے علاقوں میں اضافی سکیورٹی دستے تعینات کیے گئے۔

آج کے انتخابات میں تقریباً ایک کروڑ پچہتر لاکھ رائے دہندگان اپنے حق رائے دہی کا استعمال کرنے کی توقع تھی۔

جون پور کے علاقے سے بی بی سی کے نامہ نگار نتن سری واسوتو کا کہنا ہے کہ انتخابات کے لیے لوگوں میں زبردست جوش و خروش پایا گیا۔

ان کے مطابق صبح کے وقت لوگوں کی تعداد کم تھی لیکن جیسے جیسے دھوپ کھلی لوگ پولنگ مراکز پر ووٹ ڈالنے کے لیے پہنچنا شروع ہوگئے۔

اس مرحلے میں کئی ریاستی وزراء بھی اپنی قسمت آزمائي کر رہے ہیں۔ گزشتہ انتخابات میں اس علاقے کی زیادہ تر سیٹوں پر بہوجن سماج پارٹی نے جیت حاصل کی تھی۔

یوپی میں اس بار سات مرحلوں میں انتخابات کروائے جار رہے ہیں اور آخری مرحلہ چار مارچ کو مکمل ہوگا جس کے بعد ووٹوں کی گنتی کی جائیگي۔

اسی بارے میں