دفاعی بجٹ میں مزید اضافہ

پرنب مکھرجی تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وزیر خرانہ پرنب مکھرجی نے جمعہ کو پارلیمان میں عام بجٹ پیش کیا

بھارت کے وزیر خزانہ پرنب مکھرجی نے آئندہ مالی سال کے لیے ملک کے دفاعی بجٹ میں سترہ فیصد سے زیادہ اضافے کا اعلان کیا ہے۔

پالیمان میں جمعہ کو سن دو ہزار بارہ تیرہ کے لیے اپنا بجٹ پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دفاعی اخراجات کے لیے ایک اعشاریہ نو کھرب روپے مختص کیے گئے ہیں لیکن مسلح افواج کی اگر کوئی اضافی ضرورت ہوگی تو اسے بھی پورا کیاجائے گا۔

رواں مالی سال میں فوج کے لیے ایک اعشاریہ چونسٹھ کھرب روپے مختص کیے گئِے تھے۔

بھارت میں کئی بڑے دفاعی سودوں کو حتمی شکل دی جارہی اور ماہرین کا کہنا ہے کہ بھارتی فضائیہ کو نئے طیاروں کی سخت ضرورت ہے۔ فضائیہ کے لیے جلدی ہی ایک سو چھبیس جنگی طیاروں کے کانٹریکٹ پر دستخط کیے جاسکتے ہیں۔

فوج کے لیے مختص کی جانے والی رقم میں سے تقریبا اسی ہزار کروڑ روپے جدید ترین اسلحہ اور فوجی ساز و سامان خریدنے پر خرچ کیے جائیں گے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ دفاعی اخراجات کے لیے موجودہ ضروریات کی بنیاد پر رقم مختص کی گئی ہے اور ملک کی سلامتی کے لیے اگر مزید رقم کی ضرورت ہوگی تو وہ بھی مہیہ کرائی جائے گی۔

اس سال میں جن دفاعی سودوں کو حتمی شکل دی جاسکتی ہے ان میں ایک سو چھبیس جنگی طیاروں کے علاوہ ایک سو پینتالیس ہاوٹزر توپیں، ایک سو ستانوے ہلکے ہیلی کاپٹر اوردیگر جدید ترین ہتھیار شامل ہیں۔

ماہرین کا خیال ہےکہ بھارت اپنی دفاعی صلاحیتوں کو بہتر بنانے کے لیے آئندہ پانچ سے دس برسوں میں سو ارب ڈالر کے دفاعی ساز وسامان خرید سکتا ہے۔

اسی بارے میں