فائی کو سزا، کشمیر میں احتجاج کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ AP

کشمیری نژاد امریکی شہری سیّد غلام نبی فائی کو پاکستان کے لیے غیرقانونی لابنگ کرنے پر ایک امریکی عدالت کی طرف سے دو سال کی سزا ملنے کے بعد بھارت کے زیرانتظام کشمیر میں علیحدگی پسندوں نے امریکہ مخالف احتجاج کا اعلان کیا ہے۔

پچھلے بائیس سال میں یہ پہلا موقعہ ہے کہ علیحدگی پسندوں نے امریکہ مخالف احتجاج اور ہڑتال کا اعلان کیا ہو۔ عراق اور افغانستان پر امریکی حملوں یا صدام حسین کو پھانسی دیے جانے کے وقت بھی کشمیری علیحدگی پسندوں نے کوئی باقاعدہ احتجاجی پروگرام نہیں دیا۔

سرینگر سے ہمارے نامہ نگار ریاض مسرور نے بتایا کہ حریت کانفرنس کے دونوں دھڑوں اور دوسرے علیحدگی پسند گروپوں نے اس عدالتی فیصلہ کو ’قانونی سے زیادہ سیاسی نوعیت‘ قرار دیا ہے۔

حریت کانفرنس (گ) کے رہنما سید علی گیلانی نے ایک بیان میں لوگوں سے کہا ہے کہ وہ اس فیصلہ کے خلاف سنیچر یعنی سات اپریل کو وادی بھر میں تعلیمی اور کاروباری سرگرمیاں معطل کریں۔

انہوں نے اپنی اپیل میں کہا ’یہ فیصلہ قانونی سے زیادہ سیاسی نوعیت کا ہے۔ یہ فیصلہ شخصی آزادی اور انسانی حقوق کے خلاف ہے اور ستم ظریفی ہے کہ امریکہ خود بھی ان ہی قدروں کی دہائی دیتا رہا ہے۔‘

مسٹر گیلانی نے حکومت ہند پر الزام عائد کیا ہے کہ ایک ’سازش کے تحت غلام نبی فائی کے خلاف واشنگٹن میں محاذ کھڑا کیا گیا‘۔ انہوں نے کہا کہ احتجاج کا مقصد امریکہ کو یہ باور کرانا ہے کہ غلام نبی فائی اکیلے نہیں ہیں بلکہ پوری کشمیری قوم ان کے ساتھ ہے۔

پاکستانی زیرانتظام کشمیر میں مقیم کئی مسلح گروپوں کے اتحاد جہاد کونسل کے سربراہ سید صلاح الدین نے بھی ایک بیان میں مسٹر فائی کے خلاف عدالتی فیصلہ کو ’بھارت کی خوشنودی حاصل کرنے کا حربہ‘ قرار دیا ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ پچھلے کئی سال سے امریکہ مسئلہ کشمیر کے بارے میں عدم دلچپسی کا مظاہرہ کررہا ہے، جس کے نتیجے میں یہاں کے علیحدگی پسند سیاسی اور سفارتی طور الگ تھلگ پڑ گئے ہیں۔ بھارت اور امریکہ کے درمیان بڑھ رہے تجارتی اور دفاعی تعاون کو اس کی بڑی وجہ بتایا جارہا ہے۔

کشمیر یونیورسٹی میں عالمی قانون اور انسانی حقوق کے پروفیسر شیخ شوکت حسین کہتے ہیں: ’امریکہ ہمیشہ رائے عامہ کو اہم سمجھتا ہے۔ اگر کشمیر میں فائی مقدمہ کو لے کر بے چینی ہے، تو واشنگٹن یہ کبھی پسند نہیں کرے گا کہ سی آئی اے اور آئی ایس آئی کا ٹکراؤ کشمیر میں امریکہ مخالف جذبات بھڑکانے کا بھی موجب بنے۔‘

سینئر صحافی اور تجزیہ نگار طاہر محی الدین کا خیال ہے کہ کشمیری علیحدگی پسندوں نے ہمیشہ اپنی تحریک کو پاکستانی ڈکٹیشن کے تابع رکھا۔ ’یہی وجہ ہے کہ آج سی آئی اے اور آئی ایس آئی کی سرد جنگ کا شکار ڈاکٹر فائی بن گئے۔ اور ان کی سزا کی وجہ سے کشمیر کی تحریک کو دھچکہ لگا ہے۔‘

اسی بارے میں