اجمیر میں صدر زرداری کے استقبال کی تیاریاں

آصف علی زرداری اور منموہن سنگھ کی ایک فائل فوٹو
Image caption صدر پاکستان کی آمد سے پہلے اجمیر میں سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں

پاکستان کے صدر آصف علی زرداری اجمیر میں خواجہ معین الدین چشتی کی درگاہ کی زیارت کے لیے ایک نجی دورے پر اتوار کو بھارت آرہے ہیں اس دورے کے دوران وہ بھارت کے وزیر اعظم منموہن سنگھ سے ملاقات کریں گے ۔

امریکہ نے صدر آصف زرداری کے اس دورے کا خیرمقدم کرتے ہوئے اسے ’تعمیری‘ قرار دیا ہے۔

امریکہ کی وزارت خارجہ کے ترجمان مارک ٹونر نے کہا ہے کہ مسٹر زرداری کا بھارت دورہ ’ بے حد تعمیری ہے اور ہم اس کے حق میں ہیں۔‘

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی نے مارک ٹونر کے حوالے سے کہا ہے ’ہمارے لیے ہر لحاظ سے یہ فائدے مند ہے کہ پاکستان اور بھارت ایک دوسرے سے بات چیت کررہے ہیں اور بہتر اشتراک اور تعاون کے تعلقات بنارہے ہیں۔‘

اس سے قبل دلی میں بھارت کی وزارت خارجہ کی طرف سے جاری کی گئی تفصیلات کے مطابق صدر زرداری دلی کے ہوائی اڈے پر اتوار کو تقریباً گیارہ بجے پہنچیں گے۔ وہاں سے وہ سیدھے وزیر اعظم منموہن سنگھ کی سرکاری رہائش گاہ سیون ریس کورس جائیں گے۔

مسٹر سنگھ نے صدر زرداری کو ظہرانے پر مدعو کیا ہے۔ مسٹر سنگھ کی رہائش گاہ پر دونوں رہنماؤن کے درمیان طویل بات چیت ہونے کی توقع ہے۔

دونوں رہنماؤں کی ملاقات کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں بھارتی وزیر خارجہ ایس ایم کرشنا نے کہا ہے کہ ’سبھی سوالوں پر بات چیت ہو گی۔‘

دوپہر بعد صدر زرداری طیارے کے ذریعے جے پور پہنچیں گے۔ وہاں سے وہ اجمیر تک کا سفر ہیلی کاپٹر سے کریں گے۔ سیکیورٹی کے انتظامات سے اندازہ ہوتا ہے کہ وہ خواجہ معن الدین چشتی کی درگاہ میں تقریباً چالیس منٹ گزاریں گے ۔وہ اسی روز اسلام آباد واپس چلے جائیں گے۔

صدر زرداری کی آمد پر اجمیر میں بڑے پیمانے پر حفاظتی انتظامات کیے جا رہے ہیں۔ اجمیر سے ملنے والی اطلاع کے مطابق اتوار کے روز صدر کی آمد سے کافی دیر قبل درگاہ میں زائرین کی آمد روک دی جائے گی اور درگاہ کو جانے والے تمام راستے عام لوگوں کے بند کر دیے جائیں گے۔

اجمیر اور جے پور کے مقامی اخبارات نے خبر دی ہے کہ صدر زرداری کی حفاظت پر بھارت کے مرکزی سیکیورٹی دستوں اور خفیہ ایجنسیوں کے علاوہ متعدد مجسٹریٹ اور راجستھان کے چھ اضلاع کے پولیس سپریٹنڈنٹ بھی اپنی فورسز کے ساتھ ان کی حفاطت پر مامور کیے جا رہے ہیں۔

اجمیر میں صدر زرداری کے دورے کی کمان راجستھان پولیس کے ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل کو سونپی گئی ہے۔ اجمیر کی ہوائی پٹی پر جہاں مہمان صدر کا ہیلی کاپٹر اترے گا اس کی کمان ایک ضلح سپرینٹنڈنٹ کے ہاتھ میں ہوگی۔ ہیلی پیڈ سے درگاہ تک کے سفر کی ذمےداری ایک دیگر اعلی پولیس افسر کے تحت ہو گی اور درگاہ کے اندر کی سلامتی کا انتظام کئی فورسز کر رہی ہوں گی ۔

حفاطتی انتطامات کی نگرانی اور جائزہ لینے کے لیے سیکیورٹی کے ماہرین کی ایک ٹیم سنیچر کو ہی دلی سے اجمیر پہنچ رہی ہے۔

اجمیر درگاہ سے ملنے والی اطلاع کے مطابق درگاہ میں صدر کے استقبال کے لیے سجادہ نشینوں اور موروثی عملے کی ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔ درگاہ کی روایت کے مطابق نظام گیٹ پر موروثی عملہ مسٹر زرداری کو پیتابہ پہنائے گا۔ صدر زرداری کے نظام گیٹ کی سیڑھی پر پہلا قدم رکھتے ہی شادیانے بجا کر ان کا استقبال کیا جائے گا۔

صدر کے ساتھ ان کے اہل خاندان وزراء اور دیگر اہم شخصیات پر مشتمل ایک بڑا وفد بھی بھارت آ رہا ہے۔

اسی بارے میں