گائے کےگوشت پر طلباء کے درمیان جھگڑا

آخری وقت اشاعت:  پير 16 اپريل 2012 ,‭ 14:36 GMT 19:36 PST

طلباء نے کیمپس میں گائے کی بریانی پیش کی

بھارت کی ریاست آندھرا پردیش کے دارالحکومت حیدرآباد کی عثمانیہ یونیورسٹی میں گائے کے گوشت کھانے کے مسئلے پر دلت اور سخت گیر ہندو طلباء کے درمیان پر تشدد جھڑپیں ہوئی ہیں۔

دلتوں پر مشتمل بعض تنظیموں نے گائے کا گوشت کھانے کے لیے ایک تقریب کا اہتمام تھا اور سخت گیر ہندو نواز طلباء کی تنظیم اکھِل بھارتی پریشید نے اس کی مخالفت کی تھی۔

اسی معاملے پر طلباء کے دوگروپوں میں کشیدگی پیدا ہوئی اور اتوار کی رات دونوں گروپوں نے میں جھڑپیں ہوئیں۔

پسماندہ طبقے سے تعلق رکھنے والے دلت طلباء کی مختلف تنظیموں نے ڈاکٹر امبیڈکر کی پیدائش کے موقع پر یونیورسٹی میں ’بیف فیسٹیول ’ کا انعقاد کیا تھا۔

ان تنظیموں کا کہنا تھا کہ بڑے جانوروں کا گوشت کھانا ان کی روایت رہی ہے اور یہ ان کا حق ہے کہ گائے کا گوشت کھائیں۔ لیکن اے بی وی پی نے اس کی مخالفت کی تھی۔

اس فسٹیول میں تقریبا پندرہ سو افرادنے شرکت کی جس کے لیے زبردست سکیورٹی کے انتظامات کیے گئے تھے۔

جھڑپوں کے دوران گاڑیوں کو آگ لگائی گئي

حیدرآباد میں بی بی سی کے نامہ نگار عمر فاروق کے مطابق پروگرام کے تحت گائے کے گوشت کی بریانی یونیورسٹی کے کیمپس میں ہی پکنی تھی لیکن ہنگامے کے سبب پکی ہوئی بریانی کیمپس میں لائی گئي اور پھر لوگوں کو کھلائی گئي۔

جس وقت یہ تقریب چل رہی تھی اسی وقت اے بی وی پی کے حامیوں نے اس کی مخالفت میں جلوس نکالا لیکن ان کی تعداد بہت کم تھی۔

انہیں پولیس نے روکا تو انہوں نے پتھراؤ کیا اور پھر کچھ گاڑیوں کو آگ لگا دی۔ ہنگامے کے وقت دلت طلباء بھی سڑکوں پر نکل آئے اور انہوں نے بھی لاٹھی سے ان کا مقابلہ کیا۔

پولیس نے حالات پر قابو پانے کے لیے آنسو گيس کا استعمال کیا اور لاٹھی چارج کی۔ حکام کا کہنا ہے کہ اب حالات قابو میں ہیں۔

واضح رہے کہ گائے ہندؤں کے لیے ایک مقدس جانور ہے اور بھارت کے بیشتر علاقوں میں ہندو اس کا گوشت نہیں کھاتے۔ لیکن جنوبی ہندوستان کے بہت سے علاقوں میں دلت سماج گائے کا گوشت کھاتا ہے۔

بھارت کے بہت سے علاقوں میں گائے کے ذبیحہ پر پابندی عائد ہے لیکن ریاست آندھرا پردیش ان ریاستوں میں سے ایک ہے جہاں گائے کا گوشت کھانے کی آزادی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔