بھارتی نژاد بچے اوسلو سے دلّی پہنچ گئے

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption بچے اپنے چچا کے ہمراہ منگل کی صبح نئی دلی پہنچے

ناروے کی عدالت کے حکم پر اپنے چچا کے حوالے کیے جانے والے دونوں بھارتی نژاد بچے منگل کو واپس بھارت پہنچ گئے ہیں۔

ان دونوں بچوں کو گزشتہ برس مئی میں ناروے میں بچوں کی بہبود کے ادارے نے ان کے والدین سے چھین لیا تھا۔

بچوں کے والدین انوروپ اور سگاریکا بھٹاچاریا پر الزام تھا کہ وہ ان کی مناسب نگہداشت کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتے اور وہ بچوں کو ہاتھ سے کھانا کھلاتے ہیں اور انہیں اپنے ساتھ بستر میں سلاتے ہیں۔

تین سالہ ابیگیان اور ایک سالہ ایشوریہ کے والدین کا کہنا تھا کہ بچوں کی بہبود کا ادارہ ثقافتی فرق کو سمجھنے میں ناکام رہا ہے۔

اس معاملے میں بھارتی وزارت خارجہ کو بھی اس میں مداخلت کرنا پڑی تھی اور پیر کو سماعت کے دوران اوسلو میں بھارتی سفارت خانے کے افسران بھی عدالت میں موجود تھے۔

پیر کو اس معاملے کی سماعت کے دوران عدالت کو بتایا کہ بچوں کے رشتہ داروں اور بچوں کی بہبود کے ادارے کے درمیان ایک معاہدہ طے پایا ہے جس کے تحت بچوں کے چچا ان کے نگران ہوں گے۔

بچوں کی بہبود کے ادارے نے عدالت سے سفارش کی تھی کہ ابھیگیان اور ایشوریہ کو ان کے چچا کے حوالے کر دیا جائے تاکہ وہ انہیں واپس انڈیا لے جا سکیں۔

اس پر عدالت نے بچوں کو ان کے چچا کے حوالے کرنے کا حکم جاری کیا جس کے بعد وہ انہیں لے کر بھارت روانہ ہوگئے اور منگل کی صبح نئی دلی پہنچے جہاں سے وہ کلکتہ جائیں گے۔

نئی دلی کے ہوائی اڈے پر ان کا استقبال نائب وزیرِ خارجہ پرنیت کور نے کیا جبکہ بھارتی وزیرِ خارجہ ایس ایم کرشنا کا کہنا ہے کہ وہ بچوں کی بھارت واپسی پر خوش ہیں۔

خیال رہے کہ بچوں کی ماں پہلے ہی بھارت پہنچ چکی ہے جبکہ بچوں کے والد اب بھی ناروے میں موجود ہیں۔

".