’اغواء شدہ کلکٹر تین مئی کو رہا کریں گے‘

الیکس پال مینن
Image caption الیکس پال مینن کی اہلیہ نے اپیل کی تھی کہ انکے خاوند کو جلد رہا کیا جائے

بھارت کی ریاست چھتیس گڑھ میں ماؤ نواز باغیوں نے دعویٰ کیا ہے کہ جس ضلع کلکٹر کو انہوں نے گزشتہ ماہ اغواء کیا تھا اسے تین مئی کو رہا کردیا جائے گا۔

ماؤنواز باغیوں نے سكما کے ضلع کلکٹر الیکس پال مینن کو تین مئی کوتاڑمیٹلا کے علاقے میں رہا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

تاڑمیٹلا وہی علاقہ ہے کہ جہاں پر ماؤ نواز باغیوں نے اپنے مذاکرات کاروں کو الیکس پال مینن کی رہائی سے متعلق بات چیت کے لیے بلایا تھا اور یہ مذاکرات پوری رات جاری رہے تھے۔

ماؤنواز باغیوں نے بی بی سی کو بھیجے گئے ایک پیغام میں کہا ہے کہ وہ الیکس پال مینن کو تین مئی کو تاڑمیٹلا میں ساتھی بے ڈی شرما اور پروفیسر ہرگوپال کو سونپ دیں گے۔

یہ پیغام ایک ایس ایم ایس کے ذریعے بی بی سی کو بھیجا گیا ہے۔ بھیجنے والے نے اپنا نام وجے مڈكام لکھا ہے جو ماؤنواز باغیوں کےجنوبی ڈویژنل کمیٹی کے سیکرٹری ہیں۔

ایس ایم ایس میں کہا گیا ہے کہ ماؤ نواز باغیوں اور حکومت کے درمیان مذاکرات میں جیل میں بند باغیوں کی رہائی کے معاملے پر حکومت کے ساتھ معاہدہ ہوا ہے۔

ایس ایم ایس میں کہا گیا ہے، ’ہم ان مذاکرات کاروں کے شکر گزار ہیں کے جنہوں نے اپنی پوری کوشش کی ہے۔‘

ایس ایم ایس میں کہا گیا ہے ’ہم جناب مینن کو تین مئی کو رہا کردیں گے۔‘

چھتیس گڑھ کے وزیر اعلٰی کے چیف سیکریٹری وجیندر کمار نے کہا ہے ’بی بی سی کی ویب سائٹ سے ہمیں یہ معلومات ملی ہے کہ وہ تین تاریخ کو الیکس مینن کو رہا کردیں گے۔ حکومت کا ماؤنواز باغیوں کے ساتھ جو بھی معاہدہ ہوا ہے وہ سب کے سامنے ہے۔ ماؤ نواز باغیوں نے انسانی حقوق کے معاملات پر تشویش ظاہر کی ہے، حکومت اس کا خیال رکھے گی۔‘

واضح رہے کہ اس سے قبل پیر کو چھتیس گڑھ حکومت اور نکسلیوں کے مذاکرات کاروں کے درمیان اس بات پر اتفاق ہوا تھا کہ جن نکسلی قیدیوں کی رہائی کا مطالبہ ہورہا ہے اس کا جائزہ لینے کے لیے ایک اعلٰی سطح کی کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔

واضح رہے کہ گزشتہ مہینے الیکس پال مینن کو ماجھی پاڑا گاؤں سے اغواء کیا گیا تھا۔ وہ ایک سرکاری پروگرام میں حصہ لینے کے لیے ماجھی پاڑا گاؤں گئے تھے۔اغواء کے مقام پر اس وقت نکسلی کمانڈر رمننا اور بھیما موجود تھے۔

ماؤنواز باغیوں کی اس کارروائی میں الیکس پال مینن کے دو سیکورٹی گارڈ ہلاک ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں