اڑیسہ: پولیس انسپکٹر اغوا کے بعد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بھارتی سکیورٹی فورسز نے نکسلیوں کے خلاف آپریشن شروع کیا ہے

بھارت کی ریاست اڑیسہ میں ماؤنواز باغیوں نے ایک اسسٹنٹ پولیس انسپکٹر کو اغوا کرنے کے بعد اسے گولی مار کر ہلاک کر دیا ہے۔

ریاست کے ڈائریکٹر جنرل آف پولیس منموہن پرہراج کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ اڑیسہ کے ضلع نوا پاڑہ میں ہوا ہے۔

ہلاک ہونے والے انسپکٹر کا نام کروپا ماجھی بتایا گیا ہے جنیں سی آر پی کے ایک کیمپ کی طرف آتے ہوئے مسلح ماؤنواز باغیوں نے اپنے قبضے میں لے لیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ان کی تلاش کی جا رہی تھی جن کی لاش مل گئي ہے۔

اس سے قبل منموہن پرہراج نے کہا تھا کہ ’ایک اے ایس آئی کو اغوا کر لیا گيا ہے۔ ہمیں شک ہے کہ ماؤنواز باغیوں نے انہیں یرغمال بنا لیا ہے۔‘

کروپا مانجھی پانی کے ایک ٹینکر کے محافظ کی حیثیت سے ساتھ ساتھ تھے جو اس علاقے میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس ( سی آر پی ایف) کے کیمپ کے لیے آ رہا تھا۔

راستے میں مسلح باغیوں نے ان کی گاڑی کو روکا اور اور انہیں اپنے ساتھ لیکر گئے۔ اسی واقعے کے بعد ان کی تلاشی مہم شروع کی گئی۔

تاہم دوپہر بعد پتہ چلا کہ باغیوں نے کروپا مانجھی کو ہلاک کردیا ہے۔ پولیس نے بھی ان کی لاش ملنے کی تصدیق کر دی ہے۔

اڑیسہ کے کئی علاقوں میں ماؤنواز باغی متحرک ہیں اور حال ہی میں انہوں نے دو اطالوی سیاح اور ایک رکن اسمبلی کو اغوا کر لیا تھا۔

اطالوی سیاحوں کو تو حکومت سے معاہدے کے بعد رہا کر دیا گيا تھا لیکن رکن اسبملی کو رہا کرتے وقت یہ شرط رکھی تھی کہ وہ رکنیت سے استعفی دے دیں گے۔

رکن اسبملی جھینا ہکاکا آزادی کے بعد مستعفیٰ نہیں ہوئے ہیں اور کہا جا رہا ہے کہ ماؤنواز باغیوں نے پولیس انسپکر کوہلاک کرکے خوف پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔

اسی بارے میں