آندھرا پردیش: امیر ترین انتخابی امیدوار

بھارتی کرنسی تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption دیپک ریڈی سب سے امیر ترین امیدوار بتائے جا رہے ہیں

بھارت کی ریاست آندھرا پردیش میں اننت پور ضلع کی لوک سبھا سیٹ رائے درگ میں ضمنی انتخابات سے قبل ایک امیدوار نے اپنی املاک کی مالیت تقریباً سات ہزار کروڑ روپے بتائی ہے۔

دیپک ریڈی کا تعلق ریاست کی تیلگودیشم پارٹی سے ہے اور انہیں اب تک کا سب سے امیرترین امیدوار بتایا جا رہا ہے۔

ریاست میں ضمنی انتخابات سے پہلے نامزدگی کے وقت داخل کردہ اثاثہ جات کے مطابق دیپک ریڈی کے املاک کی مالیت چھ ہزار سات سو اکاسی کروڑ روپے بتائی گئی ہے۔

دیپک ریڈی ریاست کے سرکردہ سیاست دان پربھاکر ریڈی کے داماد اور سابق وزیر جیسی دیواکر ریڈی کے بھائی ہیں۔

واضح رہے کہ بھارت میں سنہ دوہزار چار میں انتخابی کمیشن نے یہ قانون نافذ کیا تھا کہ نامزدگی کے وقت امیدوار اپنے ذاتی ملکیت کی تفصیلات بھی پیش کریں گے تب سے لے کر اب تک کسی بھی امیدوار کی جانب سے پیش کی گئی یہ سب سے بڑی ذاتی ملکیت ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ جس ملکیت کا ذکر انہوں نے نامزدگی کے وقت کیا ہے اس میں زیادہ تر زمین جائیداد ہے۔ اطلاعات کے مطابق بعض جائیداد متنازع ہے اور اس پر انہیں مقدمے کا سامنا ہے۔

دیپک ریڈی نے بتایا ہے کہ ان کی سالانکہ انکم تین لاکھ ستائیس ہزار روپے ہے جبکہ ان کی اہلیہ کی سالانہ آمدنی دو لاکھ روپے سے کم ہے۔

دلی میں واقع ایسوسی ایشن فار ڈیموکریٹک ریفارم نامی تنظیم کا کہنا ہے کہ بھارت میں اب تک کے سب سے زيادہ امیرترین انتخابی امیدوار کی فہرست میں دیپک ریڈی کا نام سے سب سے پہلے آتا ہے اس کے بعد دوسرے نمبر پر ایس این واڈیار کا نام ہے۔لیکن ریڈی کی ملکیت ان کے مقابلے ساڑھے چار گنا زیادہ ہے۔

واضح رہے کہ ایس این واڈیار نے سنہ دو ہزار چار میں کرناٹک کی میسور لوک سبھا سیٹ سے انتخاب میں حصہ لیا تھا۔

ان کی ذاتی ملکیت ایک ہزار پانچ سو باون کروڑ روپے بتائی گئی تھی اور انہیں ان انتخابات میں شکست ہوئی تھی۔

اسی بارے میں