آسام: سیلاب سے نو لاکھ بےگھر

آسام سیلاب کا منظر تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سیلاب نے ریاست کے ستائیس میں سے اکیس اضلاع میں تباہی مچائی ہے

بھارت کی شمال مشرقی ریاست آسام کے ستائیس اضلاع میں طوفانی بارشوں کے نتیجے میں آنے والے سیلاب کی وجہ سے نو لاکھ افراد اپنا گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔

آسام میں گزشتہ پندرہ دن سے مون سون کی شدید بارشیں جاری ہیں اور سیلاب کی وجہ سے اب تک ستائیس افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔

ریاست کے وزیرِ زراعت نیل منی سین دیکا نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ سیلاب کی وجہ سے نو لاکھ افراد بےگھر ہوئے ہیں اور ان میں سے بیشتر بلند اور محفوظ مقامات پر یا خیموں میں پناہ گزین ہیں۔

وزیرِ زراعت کا کہنا تھا کہ یہ ریاست میں سنہ انیس سو اٹھانوے کے بعد آنے والا بدترین سیلاب ہے۔

آسام کے وزیرِ صحت ہمانتا بسوا شرما کے مطابق ریاست کے مرکزی دریا برہم پتر سمیت تمام دریاؤں میں پانی کی سطح انتہائی بلند ہے اور متعدد مقامات سے دریاؤں کے حفاظتی پشتوں میں شگاف پڑنے کی بھی اطلاعات ملی ہیں۔

خیال رہے کہ بھارتی ریاست آسام کی سرحد بنگلہ دیش سے ملتی ہے جہاں حالیہ بارشوں کے بعد مٹی کے تودے گرنے سے سو سے زائد لوگ مارے گئے ہیں۔

اسی بارے میں