خشک سالی سے نمٹنے کی تیاری

آخری وقت اشاعت:  منگل 24 جولائ 2012 ,‭ 08:33 GMT 13:33 PST

بھارت میں اس بار مونسون اوسطا بہت کم رہا ہے جس سے کسان پریشان ہیں

بھارتی وزیراعظم منموہن سنگھ نے مون سون بارشوں کی کمی سے نمٹنے کے لیے متعلقہ محکموں کو ریاستی حکومتوں سے رابطہ کرنے اور مناسب اقدامات کرنے کی ہدایت کی ہے۔

بھارت میں ابھی تک توقع سے بہت کم بارش ہوئی ہے جس سے بیشتر علاقوں میں زراعت کے متاثر ہونے کا خطرہ ہے۔

مرکزی حکومت کو بھی مون سون کی کمی پر تشویش ہے اسی لیے وزیراعظم نے کہا ہے کہ اس صورت حال کا ہر ہفتے جائزہ لیا جائے اور اسی کی مناسبت سے اقدامات کیے جائیں۔

حکومت کا کہنا ہے کہ بارش کی کمی سے پیدا ہونے والی صورت حال سے نمٹنے کے لیے حکومت پوری طرح تیار ہے۔

اس بات کے خدشات ہیں کہ اگر فصل اچھی نا ہوئی تو بہت سے علاقوں میں غریب خاندانوں کے لیے غذا کی کمی ہوسکتی ہے اور اس کی فراہمی کے لیے نظام کو مزید فعال اور موثر بنانا ہوگا۔

اس کے علاوہ کسانوں کی مدد کے لیے امدادی پیکیج پر بھی غور کیا جا رہا ہے جبکہ خریف کی فصل کو بچانے کے لیے حکومت مختلف طریقہ کار پر بھی غور کر رہی ہے۔

بھارت کے محکمہ موسمیات کی ایک رپورٹ کے مطابق جون سے پندہ جولائی کے درمیان مون سون کی بارشیں اوسط سے بائیس فیصد کم ہوئی ہیں۔

بھارتی محکمہ موسمیات کے ایک بیان کے مطابق ’مون سون کی پیش رفت توقعات پر پورا نہیں اتر رہی جس پر پہلے ہی سے تشویش ہے۔‘

بھارتی ریاست مہاراشٹر، اتراپردیش، بہار، راجستھان اور خاص طور پر پنجاب میں اس بار ابھی تک کم بارشیں ہوئی ہیں۔ اگرچہ دھان کی بوائي ہوئی ہے تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر بارش کی صورت حال ایسی ہی رہی تو اس سے فصل بہت متاثر ہوگي۔

شعبہ ذراعت کے ماہرین کا کہنا ہے کہ بارش کی کمی سے خریف کی فصل پہلے ہی متاثر ہوچکی ہے اور اگر اب معمول کے مطابق بارش ہو بھی جائے تواب وہ بات نہیں رہی گی۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔