مہنگائی سے بہت خوش ہوں: مرکزی وزیر

آخری وقت اشاعت:  پير 20 اگست 2012 ,‭ 14:46 GMT 19:46 PST
بینی پرساد ورما

بھارتی وزیر کے بیان کے بعد شدید ردِ عمل دیکھنے میں آیا ہے

بھارت کے ایک مرکزی وزیر بینی پرساد ورما نے کہا ہے کہ ملک میں اجناس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں سے وہ خوش ہیں کیونکہ اس سے کسانوں کو فائدہ پہنچے گا۔ ان کے اس بیان سے تنازعہ پیدا ہو گیا ہے اور حزب اختنلاف کی جماعت بی جے پی اور دیگر جماحتوں نے مسٹر ورما پر شدید تنقید کی ہے۔

اتر پردیش میں ایک تقریب میں شرکت کے دوران سٹیل کے مرکزی وزیر بینی پرساد ورما نے کہا کہ دال، آٹا اور سبزیوں کی قیمتیں بڑھتی جا رہی ہیں ۔ جتنی زیادہ قیمتیں بڑھیں گی اتنا ہی زیادہ فائدہ کسانوں کو پہنچے گا۔ ’میں تو مہنگائی سے بہت خوش ہوں۔‘

انہوں میڈیا پر چوٹ کرتے ہوئے کہا کہ میڈیا نے غیر ضروری طور پر مہنگائی کے بارے میں واویلہ مچا رکھا ہے ۔ ’میڈیا کہتا ہے کہ کھانے کی تھالی مہنگی ہو گئی ہے ۔ اس سے فائدہ کسانوں کا ہے اور حکومت کسانوں کے فائدے کے حق میں ہے۔‘

حزب اختلاف کی جماعت بی جے پی نے ملک میں مہنگائی کے سوال پر پہلے ہی تحریک چلا رکھی ہے اور گزشتہ دنوں پارٹی نے دلی میں کئی مقامات پر مظاہرے اور جلسے جلوسوں کا اہتمام کیا تھا۔ مسٹر بینی پرساد ورما کے بیان پر شدید رد عمل ظاہر کرتے ہوئے بی جے پی کے رہنما شاہنواز حسین نے حکمراں کانگریس پر الزام لگایا کہ عام آدمی کو جس طرح کی منگائی کا سامنا ہے اس سے وہ چشم پوشی کر رہی ہے۔ ’کانگریس کے رہمناؤں پر مہنگائی کا تو کوئی اثر نہیں پڑتا لیکن انہیں بڑھتی ہوئی مہنگائی کی جو مار عام آدمی پڑھ رہی ہے وہ نظر نہیں آتی۔‘

انہوں نے مزيد کہا کہ کانگریس اپنی پالیسیوں میں عام آدمی کی بات کرتی ہے لیکن وہ ان کے مسائل سے اپنی توجہ ہٹا چکی ہے۔

بی جے پی کے رہنما نے کہا کہ کسانوں کو انتہائی مہنگے داموں پر کھاد اور بجلی مل رہی ہے تو پھر کس طرح مہنگائی سے انہیں فائدہ پہنچ سکتا ہے۔

کانگریس کی اتحادی سماجوادی پارٹی نے بھی مرکزی وزیر کے بیان پر نکتہ چینی کی ہے۔ پارٹی کے ایک رہنما نے کہا کہ مسٹر ورما کابینہ میں رہنے کے لائق نہیں رہ گئے ہیں۔ مہنگائی کے بارے میں مسٹر ورما کا بیان انتہائی غیر ذمہ دارانہ ہے۔ اس سے واضح طور پر پتہ چلتہ ہے کہ وہ زمینی حقائق سے کٹے ہوئے ہیں۔ سبزی ہو یا دال، بڑھتی ہوئی قیتوں کا فائدہ کسانوں کو نہیں پہنچتا۔‘

جنتا دل یونائٹیڈ نے بھی مسٹر ورما پر نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ مہنگائی، بد عنوانی، غریبی اور بے روز گاری پر موثر طریقے سے قابو پانے کے بجائے اعلیٰ وزیر بڑھتی ہوئی مہنگائی کو صحیح ثابت کرنے کو کوشش کر رہے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔