کڈن کلم جوہری پلانٹ کے خلاف دوبارہ احتجاج

آخری وقت اشاعت:  پير 10 ستمبر 2012 ,‭ 08:30 GMT 13:30 PST
کڈنکلم پلانٹ

کڈنکلم جوہری پلانٹ تمل ناڈو کے ترنلویلی ضلع میں واقع ہے

بھارت کی جنوبی ریاست تمل ناڈو کے کڈن کلم جوہری پلانٹ کے خلاف پھر سے احتجاجی مظاہرے ہوئے ہیں۔

مظاہرین کے خلاف پولیس نے سخت کارروائی کی ہے۔

پیر کی صبح پولیس نے جب احتجاجی مظاہرین کے خلاف کارروائی شروع کی تو دونوں میں جھڑپیں شروع ہوگئیں۔

پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کے گولے پھینکے اور لاٹھی چارج کیا۔

پولیس کی کارروائی کے نتیجے میں مظاہرین جوہری پلانٹ کے اطراف سے منشتر ہو گئے ہیں۔

کڈن کلم جوہری پلانٹ تمل ناڈو کے ترنلویلی ضلع میں واقع ہے جہاں ایک ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے صلاحیت کے حامل دو پلانٹ پیداوار شروع کرنے والے ہیں۔

سکیورٹی خدشات کے تحت مقامی لوگوں کے احتجاج کی وجہ سے كڈن كلم جوہری پلانٹ کا کام متاثر ہوتا رہا ہے۔

جوہری پلانٹ کے خلاف احتجاج کے لیے کڈن کلم کے قریبی گاؤں کے لوگ اتوار کے روز سے ہی احتجاج کے لیے جمع ہونا شروع ہو گئے تھے اور رات کو قریبی دیہات کے ہزاروں افراد بھی ان کے ساتھ شامل ہو گئے۔

مظاہرین جوہری پلانٹ کا محاصرہ کرنے والے تھے لیکن پولیس نے انہیں راستے ہی میں روک دیا۔

کڈن کلم کے ساحلی علاقے میں روس کی مدد سے تعمیر کیے جانے والے جوہری پلانٹ کی ابتداء ہی سے مخالفت ہو رہی ہے لیکن گزشتہ چھ ماہ سے خاموشی تھی۔

آس پاس کے گاؤں والے پلانٹ کے خلاف سراپا احتجاج ہیں

اطلاعات کے مطابق اس جوہری تنصیب میں اب کسی بھی وقت ایندھن بھرنے کا کام شروع ہونے والا ہے اسی لیے اس کی مخالفت پھر سے شروع ہوئي ہے۔

حکومت نے مظاہرین پر قابو پانے کے لیے علاقے میں چار ہزار سے زیادہ پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا ہے۔

جوہری پلانٹ ساحل کے قریب تعمیر کیا گیا ہے لیکن آس پاس کے دیہاتیوں کا کہنا ہے کہ اس پلانٹ سے ان کی زندگی خطرے میں پڑ جائے گی۔

مرکزی حکومت اس جوہری پلانٹ پر کام روکنے کو تیار نہیں ہے۔

حکومت کا کہنا ہے کہ جوہری توانائی کی پیداوار کے لیے کڈن کلم پلانٹ ملک کا سب سے بڑا منصوبہ ہے اور اس کی تعمیر کے لیے سکیورٹی کے عالمی معیار کو اپنایا گيا ہے۔

اس سے پہلے وزیراعظم منموہن سنگھ بذات خود مقامی لوگوں کو ان کے تحفظ کے متعلق یقین دہانی کرا چکے ہیں لیکن اس کا کوئی اثر نظر نہیں آیا ہے اور عوام کا احتجاج جاری ہے۔

جاپان کے فوکوشیما میں سونامی کے بعد سے جو حالات پیدا ہوئے ہیں اس کے بعد بھارت میں تعمیر ہونے والے نئے جوہری پلانٹ کے خلاف احتجاج شروع ہوئے ہیں۔

ریاست مہاراشٹر میں ممبئی کے پاس جیتا پور کے پلانٹ کے خلاف بھی احتجاجی مظاہرے ہوتے رہے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔