تمل ناڈو اور آندھرا پردیش میں طوفان کاخطرہ

آخری وقت اشاعت:  منگل 30 اکتوبر 2012 ,‭ 09:24 GMT 14:24 PST

تمل ناڈو کے کئی علاقوں میں زبردست بارشیں ہوئی ہیں

بھارت کی جنوبی ریاست آندھرا پردیش اور تمل ناڈو کے ساحلی علاقوں میں طوفان کے خطرے کے پیش نظر ریڈ الرٹ کا اعلان کیا گیا ہے۔

تمل ناڈو کی حکومت نے طوفان کے خطرے کے پیش نظر سکولوں میں تعطیل کا اعلان کیا ہے اور آندھرا پردیش میں ماہی گيروں کو خبردار کر دیا گيا ہے۔

خلیج بنگال میں ہوا کے زبردست دباؤ کے سبب منگل کی صبح تمل ناڈو کے کئي ساحلی علاقوں میں زبردست بارشیں ہوئی ہیں اور حکام کا کہنا ہے کہ بدھ تک یہ دباؤ سمندری طوفان میں تبدیل ہو سکتا ہے۔

محکمۂ موسمیات کا کہنا ہے کہ بدھ کے روز طوفان تمل ناڈو کے ساحلی ضلعے نگاپٹنم سے ہوتے ہوئے آندھرا پردیش کے ساحلی علاقے نیّلور کے درمیان گزر سکتا ہے۔

محکمۂ موسمیات کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ خلیج بنگال کے جنوب مغرب میں ہوا کا دباؤ مغرب کی جانب بڑھ آيا ہے۔

'' اس میں مزید تیزی آئیگي جو سمندری طوفان کی صورت اختیار کرسکتا ہے اور کچھ وقت کے لیے مغرب کی طرف بڑھ کر سری لنکا کے ساحل کے پاس رکےگا۔ پھر شمال مغرب کی طرف بڑھیگا اور کل دو پہر تک تمل ناڈر کے ناگا پٹنم اور آندھر پردیش کے نیلّور کے ساحلی علاقوں سے گزرنے کا امکان ہے۔''

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ اس سے بہت تیز اور زبردست بارشیں ہوں گی اور پچپن سے پینسٹھ کلو میٹر فی گھنٹے کے رفتار سے ہوائیں چلنے کی امید ہے۔

’ہوا کی رفتار وقت کے ساتھ تیز ہوتی جائے گی اور آئندہ اڑتالیس گھنٹوں تک تمل ناڈر کے شمالی علاقے پونڈی چيری اور اس سے متصل آندھر پردیش کے ساحلوں میں سمندر میں زبردست ہلچل رہے گي۔‘

ادھر دونوں ریاستوں کی حکومت نے اس خطرے سے نمٹنے کے لیے تیاریاں شروع کر دی ہیں اور متاثر ہونے والے علاقوں میں لوگوں کو خبردار کیا جا رہا ہے۔

انتظامیہ نے حالات سے نمٹنے کے لیے کنٹرول روم کا قیام کیا ہے اور ماہی گیروں کو ساحل سے دور جانے کے احکامات دیے گئے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔