بھارتی بچے طوفان سینڈی میں گِھر گئے

آخری وقت اشاعت:  منگل 30 اکتوبر 2012 ,‭ 08:13 GMT 13:13 PST
سمندری طوفان سینڈی

بھارت کے دارلحکومت دلی اور ریاست ہماچل پردیش کے شہر شملہ کے سکولوں کے بچوں کو ایک گروپ ناسا کے دورے پر امریکہ گیا تھا لیکن سمندری طوفان سینڈی کےباعث وہ نیو جرسی کے ہوٹل میں پھنس کر رہ گئے ہیں۔ تاہم سکولوں کا کہنا ہے کہ بچے محفوظ ہیں۔

اس گروپ میں انتیس بچے شامل ہیں۔

واضح رہے کہ جزائر غرب الہند میں تباہی مچانے کے بعد سمندری طوفان ’سینڈی‘ امریکہ کی مشرقی ریاستوں کے قریب پہنچ گیا ہے۔ نیو جرسی، نیویارک، میری لینڈ، پینسلوانیا سمیت امریکہ کی بارہ ریاستیں اس طوفان کی زد میں ہیں۔ طوفان کے سبب نیویارک میں تیرہ ہلاکتوں کی خبر ہے۔

بچوں کے ساتھ امریکہ کے دورے پر گئے روہت شرما نے بی بی سی کو فون پر بتایا کہ سبھی بچے اور ان کے ہمراہ آنے والے اساتذہ پوری طرح محفوظ ہیں۔

ان کا کہنا تھا ’اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ بچے گھبرائے ہوئے ہیں، لیکن ہم نے ان کی حفاظت کا معقول انتظام کیا ہوا ہے۔‘

ان کا مزید کہنا تھا ’چونکہ یہاں پہلے سے ہی وارننگ دی گئی اس لیے ہم نے کھانے پینے کا سامان خرید لیا تھا۔ اس کے لیے ہم نے موم بتیاں بھی خرید لیں تھیں۔‘

انہوں نے بتایا کہ یہ بچے دلی کے اہلکون پبلک سکول اور شملا کے آکلینڈ پبلک سکول کے ہیں اور گروپ میں پانچویں سے دسویں درجے تک کے بچے شامل ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ بچوں کو بدھ کو بھارت واپس آنا تھا۔

روہت شرما نے بتایا ’ہم نے پیر کو کافی خریداری کی تھی کیونکہ بدھ کو ہمیں واپس جانا تھا لیکن فی الحال چونکہ سبھی پروازيں منسوخ کردی گئی ہیں اس لیے ابھی معلوم نہیں کہ گھر واپسی کب ہوگی۔‘

انہوں نے کہا کہ ’بچے اپنے والدین اور گھروالوں کو یاد کر رہے ہیں لیکن ہم ان کے ساتھ گانا گاکر ناچ کر ان کو مصروف رکھنے کی کوشش کررہے ہیں۔‘

روہت نے بتایا کہ فی الوقت وہ سب نیوجرسی کے ایک ہوٹل میں ٹھہرے ہوئے۔ بجلی نہ ہونے کی وجہ سے ہوٹل کی لفٹ نہیں چل رہی ہے اور وہ کھانا بھی آرڈر نہیں کر پارہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ وہ امید کرتے ہیں کہ وہ جلد ہی بھارت واپس آسکیں گے اور بچے اپنے والدین سے دوبارہ مل سکیں گے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔