راجھستان: ’پاکستانی ہندوؤں کے بچوں کو داخلہ دیں‘

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 2 نومبر 2012 ,‭ 06:56 GMT 11:56 PST

سینکڑوں ہندو خاندان پاکستان سے بھارت نقل مکانی کر چکے ہیں

بھارتی ریاست راجستھان کی حکومت نے پاکستان سے نقل مکانی کر کے بھارت آنے والے ہندوؤں کے بچوں کو بھارتی تعلیمی اداروں میں داخلے کی اجازت دے دی ہے۔

اس اجازت سے صرف وہ خاندان فائدہ اٹھا سکیں گے جو طویل مدت قیام کے ویزے پر بھارت میں موجود ہیں اور ان کی نیت یہاں مستقل قیام کی ہے۔

ریاستی حکومت نے تمام ضلع مجسٹریٹوں کو اس سلسلے میں حکمنامہ بھیج دیا ہے جس کے تحت سرکاری اور نجی تعلیمی ادارے ایسے بچوں کو داخلہ دینے کے پابند ہوں گے۔

راجستھان کی حکومت نے حکم نامے میں کہا ہے کہ بھارت میں قیام پذیر پاکستانیوں کے بچوں کو تعلیمی اداروں میں داخلہ نہ دینا انصاف پر مبنی عمل نہیں۔

پاکستان سے بھارت نقل مکانی کرنے والے ہندوؤں کی فلاح کے لیے کام کرنے والی تنظیم سیمنت لوک سنگٹھن کا کہنا ہے کہ راجستھان میں سات ہزار ایسے پاکستانی ہندو موجود ہیں جن کے پاس بھارتی شہریت نہیں۔

جے پور میں بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق تنظیم کے صدر ہندو سنگھ سوڈھا نے اس فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی تعلیمی ادارہ ایسے بچوں کو داخل کرنے پر تیار نہیں تھا اور اب اس فیصلے سے پاکستانی ہندوؤں کے بچوں کے لیے تعلیم کی راہیں کھل جائیں گی۔

یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا تھا جب جودھ پور میں قیام پذیر پاکستانی ہندوؤں نے اپنے بچوں کے داخلے کے لیے سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں کا رخ کیا تھا اور ان اداروں نے انہیں داخلہ دینے سے انکار کر دیا تھا۔

سیمنت لوک سنگٹھن نے ایسے بچوں کو تعلیم دینے کے لیے جودھ پور میں ان کے کیمپ میں ایک تعلیمی مرکز قائم کر رکھا ہے۔

پاکستان سے نقل مکانی کرنے والے ہندو گووردھن کے مطابق ’اگر یہ فیصلہ نہ آتا تو ہمارے بچے تعلیم کی نعمت سے محروم ہی رہتے‘۔

خیال رہے کہ اب تک سینکڑوں ہندو خاندان پاکستان سے بھارت نقل مکانی کر چکے ہیں اور یہ افراد اس نقل مکانی کی وجہ مذہبی بنیادوں پر ان کی جان کو لاحق خطرات بتاتے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔