آوارہ کتا چار لاکھ روپے لے کر ’فرار‘

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 19 جنوری 2013 ,‭ 14:03 GMT 19:03 PST
کتے

بھارت کے سڑکوں پر آوارہ کتوں کا ہونا عام بات ہے

بھارتی ریاست بہار میں ایک تاجر نے پولیس میں رپورٹ درج کرائی ہے کہ ایک آوارہ کتا ان کا چار لاکھ روپوں سے بھرا بیگ لے کر بھاگ گیا ہے۔

یہ دلچسپ واقعہ بہار کے دارالحکومت پٹنہ سے ڈیڑھ سو کلومیٹر دور گوپال گنج ضلع میں پیش آیا ہے۔

نکچھید میاں نامی تاجر نے پولیس میں جو رپورٹ درج کرائی ہے اس میں انہوں نے کہا ہے کہ نوٹوں سے بھرا بیگ ان کے بستر پر رکھا تھا، وہ نل پر ہاتھ دھونے کے لیے باہر نکلے ٹھیک اسی وقت ایک کتا ان کے کمرے میں گھنسا اور بیگ اٹھا کر بھاگ گیا۔

جب اس کتے کی تلاش ہوئی تب نکچھید کے گھر کے نزدیک سڑک پر ایک لاکھ چالیس ہزار روپے پڑے ملے لیکن باقی پیسے ابھی تک نہیں مل پائے ہیں۔

بھارت میں سڑکوں پر آوارہ کتے عام ہیں اور پولیس کا کہنا ہے کہ شاید کتے نے سوچا ہوگا کہ بیگ میں کچھ کھانے کا سامان ہے۔

نکچھید میاں نے اس واقعہ کی تحریری شکایت درج کرائی ہے لیکن پولیس اہلکار دیوندر پرساد کا کہنا ہے کہ کتے کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا سوال ہی نہیں اٹھتا ہے۔

نکچھید میاں کا کہنا ہے کہ ان کی بیٹی یو اے ای میں کام کرتی ہے اور اس نے زمین خریدنے کے لیے یہ رقم بھیجی تھی۔

مقامی لوگوں نے نکچھید میاں کے بیگ کی تلاش کا کام شروع کر دیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ کتے نے کہیں بیگ چھوڑ دیا ہوگا اور ہو سکتا ہے اسے کسی اور نے اٹھا لیا ہو۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔