بھارت: ذاتی دفاع، خواتین میں چاقو تقسیم

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 24 جنوری 2013 ,‭ 15:03 GMT 20:03 PST

بھارت کی ریاست مہاراشٹرا میں شیو سینا جماعت نے اپنی خواتین کارکنوں کو ذاتی دفاع کے لیے چاقو دیے ہیں۔

انہوں نے یہ اقدام دہلی میں ایک لڑکی کی گینگ ریپ کے تناظر میں کیا ہے۔

شیو سینا کے رہنما بال ٹھاکرے کی سالگرہ کے موقع پر ممبئی میں منعقد ہوئی ایک تقریب کے دوران خواتین میں چاقو تقسیم کیے گئے۔

شیو سینا کے ترجمان کے مطابق وہ خواتین کو ہزاروں کی تعداد میں مزید چھوٹے چاقو دیں گے۔

"جس طرح آپ سبزی کاٹتی ہیں اسی طرح اس بندے کے ہاتھ کاٹیں جو آپ کو چھوئے"

شیو سینا پارٹی کے اہلکار اجے چوہدری

یاد رہے کہ دہلی میں گذشتہ دسمبر کو 23 سالہ فزیوتراپی کی طالبہ کے ساتھ گینگ ریپ کے خلاف پورے ملک میں احتجاجی مظاہرے ہوئے تھے اور خواتین کو مزید تحفظ فراہم کرنے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق شیو سینا پارٹی کے ایک اہلکار اجے چوہدری نے کہا کہ’ جس طرح آپ سبزی کاٹتی ہیں اسی طرح اس بندے کے ہاتھ کاٹیں جو آپ کو چھوئے۔‘

انہوں نے کہا کہ خواتین کو یہ تین انچ چاقو اپنے پرس میں رکھنے چاہیے۔

اجے چوہدری کے مطابق بال ٹھاکرے نے کہا تھا کہ خواتین اپنے پرس میں سرخی کے بجائے رام پوری (چھوٹا چاقو) رکھا کریں۔

ان کاکہنا تھا کہ ’ہم یہ چاقو اس لیے دے رہے ہیں تاکہ خواتین اپنا دفاع کر سکیں۔‘

ادھر پولیس کے مطابق یہ چاقو ’خطرناک‘ نہیں ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔