آندھرا پردیش: ہوٹل کی عمارت گرنے سے 12 ہلاک

بھارت میں پولیس کے مطابق آندھرا پردیش میں حیدرآباد کے جڑواں شہر سکندرآباد میں ایک ہوٹل کی عمارت گرنے سے کم سے کم 12 افراد ہلاک اور 18 زخمی ہو گئے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ابھی یہ واضح نہیں کہ حیدر آباد کے قریب واقع اس ہوٹل کے ملبے تلے مزید کتنے افراد پھسنے ہوئے ہیں۔

بی بی سی کے نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ بھارت میں ایسے واقعات پیش آتے رہتے ہیں اور ان کا الزم عام طور پر غیر معیاری تعمیرات پر عائد کیا جاتا ہے۔

بھارتی پولیس کے ایک سینئیر اہلکار بی سوریندر نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ حادثے کے وقت ہوٹل میں کم سے کم 25 افراد کام کر رہے تھے جب اس کے ایک باروچی خانے کی دیواریں گر گئیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہوٹل میں کام کرنے والے افراد کے مطابق اس ہوٹل کی عمارت بہت پرانی ہو چکی تھی اور اس کی دیواروں میں شگاف تھے۔

حیدرآباد کے پولیس کمشنر انوراگ شرما نے بی بی سی ہندی کے ساتھ بات کرتے ہوئے ان ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔

سٹی لائٹ نام کا یہ ہوٹل سکندرآباد میں راشٹرپتی روڑ پر واقع ہے۔

ہوٹل کی دو منزلہ عمارت پیر کی صبح مقامی وقت کے مطابق سات بجے گری۔

پولیس کے مطابق 20 افراد کو بچا لیا گیا ہے لیکن اب بھی عمارت کے ملبے میں بہت سے لوگوں کے پھنسے ہونے کا خدشہ ہے۔

سکندرآباد کا راشٹرپتی روڈ کافی مصروف علاقہ ہے۔ ملبے کو ہٹانے کا کام جاری ہے۔ اس ہوٹل کے آس پاس کی سڑکیں بند کر دی گئی ہیں۔

واضح رہے کہ بھارت کے مغربی شہر ممبئی میں گزشتہ ماہ دو مختلف عمارات گرنے سے نو افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

رواں سال اپریل میں ممبئی کے اطراف میں ایک عمارت گرنے سے 74 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

اسی بارے میں