ایڈیٹر کا انتخاب

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 16 اگست 2012 ,‭ 16:33 GMT 21:33 PST
عامر احمد خان

اردو سروس کے سربراہ عامر احمد خان

آخر کار ہم نے بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر ادبی صفحہ شروع کرنے کی تاریخ طے کر ہی لی۔ آپ شاید حیران ہونگے کہ صرف ایک تاریخ طے کرنے میں اتنا وقت کیوں لگا۔ اس کا مختصر جواب یہ ہے کہ بی بی سی جیسے بڑے ادارے میں جس کا بنیادی کام خبر رسانی ہے، ادارتی اور تکنیکی اعتبار سے ایک معیاری ادبی صفحہ بنانے کے لیے بہت سے لوگوں سے مشورہ کرنا پڑتا ہے، بہت سے انتظامی معاملات طے کرنے پڑتے ہیں۔ بہرحال، ان میں سے کچھ مراحل طے پا گئے ہیں اور باقی وقت کے ساتھ ساتھ نمٹ جائیں گے۔

اگر سب کچھ وقت پر ہو گیا تو انیس اکتوبر کو آپ بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر ادبی صفحہ دیکھ سکیں گے۔ آپ دعا کیجئیے اور ہم کوشش کریں گے کہ اس میں تاخیر نہ ہو۔

لیکن ایسا کرنے کے لیے ہمیں آپ کی دعا ہی نہیں بلکہ مسلسل مدد اور سہارے کی ضرورت ہو گی۔ کیونکہ یہ صفحہ بنیادی طور پر آپ کی فرمائش پر شروع ہو رہا ہے اس لیے میں چاہتا ہوں کہ اس کے لیے مواد اکٹھا کرنے میں بھی آپ ہماری مدد کریں۔

اس صفحے پر ہم کتابوں پر تبصرے یا ان کے اقتباسات، مصنفوں سے انٹرویو، اردو ادب کے مشہور سلسلوں پر تبصرے اور ادبی نشستوں کا احوال وغیرہ تو پیش کریں گے ہی لیکن مجھے اس سے کہیں زیادہ دلچسپی ان کہانیوں میں ہو گی جو آپ ہمیں بھیجیں گے۔ اپنے طور پر ہم نئے لکھنے والوں پر خصوصی توجہ دینگے اور آپ سے بھی گزارش ہو گی کہ آپ اپنا انتخاب ہمیں ضرور بھیجیے گا، نثر میں بھی اور شاعری میں بھی۔

اگر آپ چاہیں تو یہ سلسلہ ہم فوراً میرے اس کالم کے ذریعے بھی شروع کر سکتے ہیں۔ آپ مجھے اسی ای میل پر اپنا انتخاب بھیجیے جس پر آپ مجھے اپنی رائے بھیجتے ہیں اور میں اسے اس کالم میں شامل کرنے کی کوشش کروں گا۔ یوں یہ سلسلہ بھی شروع ہو جائے گا اور ادبی صفحہ شروع ہونے تک ہمیں اس کی نوک پلک سنوارنے کا موقع بھی مل جائے گا۔

آجکل میرے چند ساتھی نئے لکھاریوں سے رابطہ کر رہے ہیں جنہیں ہم اس صفحے پر لکھنے کی دعوت دیں گے۔ اگر آپ کا کوئی پسندیدہ لکھاری ہو تو ہمیں اس کے بارے میں ضرور بتائیے اور اگر آپ خود فکشن لکھنے میں دلچسپی رکھتے ہیں تو اپنی تحریر براہ راست مجھے بھیجیے۔ بس یہ خیال رکھیے گا کہ آپ کی کہانی بارہ سو الفاظ سے زیادہ کی نا ہو۔

میرے کچھ ساتھیوں نے یہ بھی تجویز کیا ہے کہ ہم ڈرامہ لکھنے والوں کو بھی بی بی سی کے ادبی صفحے پر لکھنے کی دعوت دیں۔ نہ صرف یہ بلکہ ان میں سے منتخب ڈراموں کو اپنے ریڈیو پروگرام میں بھی پیش کریں۔ آپ کا اس کے بارے میں کیا خیال ہے؟

مجھے اس سلسلے میں آپ کے خط کا انتظار رہے گا۔

میری خواہش ہو گی کہ بھارت میں اردو ادب کے مداح خاص طور پر بی بی سی کے اردو صفحے میں دلچسپی لیں۔ میرے ساتھی انور سن رائے کا کہنا ہے کہ انڈیا سے پاکستان کتابوں کی آمد و رفت اب بھی غیر تسلی بخش ہے اس لیے ان دونوں ممالک کے قارئین ایک دوسرے کے کام کے بارے میں بہت کم جانتے ہیں۔ اگر آپ ہمارا ساتھ دیں تو بی بی سی کا ادبی صفحہ ایک ایسا پلیٹ فارم بن سکتا ہے جس سے ایسی تشنگی آسودہ ہو سکے۔

اور اب جانے سے پہلے ہمارے ایک قاری کی رائے۔ منیر احمد خلیلی ایک بلاگر ہیں اور انہوں نے مریخ پر کیوریوسٹی کی لینڈنگ پر میرے کالم کے جواب میں جو لکھا، اس کا کچھ حصہ پیش خدمت ہے۔ اگر آپ ان کی پوری تحریر پڑھنا چاہیں تو بلاگ سپاٹ پر جا کر پڑھ سکتے ہیں۔

محترم مدیر بی بی سی اردو،

مجھے پوری دلچسپی اور شوق کے باوجود با قاعدگی کے ساتھ بی بی سی دیکھنے سننے کا وقت نہیں ملتا۔ جب ملتا ہے تو آپ کی تحریر پڑھنے کی کوشش ضرور کرتا ہوں۔ آج امریکہ کے مریخ پر اترنے کے تناظر میں آپ نے جو تصویر وطن کھینچی ہے وہ واقعی سچی تصویر ہے۔ اس منزل پر ہمارے کارواں کے رکے رہنے اور ہماری اجتماعی زندگی اور اجتماعی فکر میں جمود کی کیفیت کی تعبیریں مختلف انداز میں کی جاتی ہیں۔ ہمیں ایک دوسرے کی تعبیروں کو اکثر رد کر دینے کے بجائے ان پر تھوڑا غور کرنے کا حوصلہ پیدا کرنا چاہیے اور دلیل کے ساتھ اپنی رائے اور اپنا موقف سامنے رکھ دینا چاہیے۔

آج ہمارے ٹی وی چینلز کے ٹاک شوز پر ذرا ایک نظر ڈالیے۔ یوں لگتا ہے ٹاک شو ایک سنجیدہ گفتگو اور اظہار رائے کا فورم نہیں بلکہ میدان جنگ ہے۔ اس روش کے پروان چڑھ آنے کے بعد عقل، فکر اور تدبر کا کوئی امکان رہتا ہے؟ یہ ٹاک شو قوم کے اندر جتنا انتشار، فکر اور ژولیدگی پیدا کر رہے ہیں، ڈر ہے کہ ہماری قوم کو کچھ عرصہ بعد یہ دن بھی شاید دیکھنے پڑ جایئں کہ لاٹھیاں، کلہاڑیاں اور آتشیں اسلحہ لے کر سیاسی لیڈر پہنچا کریں گے۔

منیر احمد خلیلی

ہم تک اپنی رائے اور مشورے پہنچانے کے لیے آپ ہمیں ای میل کر سکتے ہیں۔ ای میل کرنے کا پتہ ہے:

askbbcurdu@bbc.co.uk

مجھے آپ کی جانب سے رابطے کا انتظار رہے گا۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔