Got a TV Licence?

You need one to watch live TV on any channel or device, and BBC programmes on iPlayer. It’s the law.

Find out more
I don’t have a TV Licence.

لائیو رپورٹنگ

time_stated_uk

بی بی سی اردو کی پی آئی اے طیارہ حادثے کے بارے میں لائیو اپ ڈیٹس اپنے اختتام کو پہنچ گئی ہیں۔ مزید اطلاعات کے لیے یہاں کلک کریں

‫حادثے کا شکار ہونے والے طیارے کے مسافروں کی باقیات ایمبولینس کے ذریعے منتقل کی جا رہی ہیں۔ 

View more on facebook

تباہ شدہ طیارہ

‫پی آئی اے کی پرواز پی کے 661‬⁩ کے طیارے کا پچھلا حصہ جو مکمل حالت میں پہاڑ پر پڑا ہے۔‬ ویڈیو: طاہر عمران

View more on facebook

’لاشوں کی شناخت میں مشکلات درپیش‘

ایبٹ آباد کے ایوب میڈیکل کمپلیکس میں ڈاکٹر جنید سرور اور اسسٹنٹ کمشنر عنصر محمود نے یی بی سی کے نامہ نگار ذیشان ظفر سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ لاشوں کی شناخت کا عمل جاری ہے لیکن لاشیں اس قدر مسخ ہوچکی ہیں ان کی نادرا سے شناخت میں مشکلات درپیش آرہی ہیں۔  دیکھیے مکمل ویڈیو 

View more on facebook

مزید دو لاشوں کی تلاش جاری

 ایبٹ آباد سے نامہ نگار ذیشان ظفر نے بتایا ہے کہ ڈسٹرکٹ ریسکیو آفیسر غیور خان کے مطابق جائے وقوعہ پر مزید دو لاشوں کی تلاش جاری ہے لیکن اندھیرے کے باعث تلاش کے کام میں مشکلات درپیش ہیں۔ غیور خان کا کہنا ہے کہ طیارے کا ملبہ ایک بڑے علاقے میں پھیلا ہوا ہے اور روشنی کا مناسب کا انتظام نہیں ہے۔  

طیارہ
EPA

بریکنگجہاز کے بلیک بکس اور وائس ریکارڈر مل گئے

ایبٹ آباد سے بی بی سی کے نامہ نگار طاہر عمران نے بتایا ہے کہ پی آئی اے کی انجیئرنگ ٹیم کو جائے وقوعہ سے جہاز کا بلیک بکس اور وائس ریکارڈر مل گیا ہے۔ انجیئرنشگ ٹیم کے مطابق بلیک بکس اور وائس ریکارڈر کو تحقیقات کے بھیجوا دیا گیا ہے جبکہ جائے وقوعہ پر فورنزک ٹیمیں بھی پہنچ گئی ہیں۔  

طیارہ
BBC

46 لاشیں مل گئیں

ڈی سی او ایبٹ آباد کے مطابق طیارے کے حادثے میں ہلاک ہونے والے 46 افراد کی لاشیں مل گئی‌ ہیں۔ 

آرمی چیف کا طیارہ حادثے پر اظہار افسوس

پاکستان فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے طیارے کے حادثے میں جانی نقصان پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔  

طیارہ حادثہ
AP

’تم جیسا فینامِنا نہیں دیکھا‘

’طیارے میں سوار تمام افراد ہلاک‘

اعظم سہگل نے بتایا کہ حادثے میں طیارے میں سوار تمام مسافر اورعملے کے ارکان ہلاک ہو گئے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ میتوں کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے کل صبح اسلام آباد کے پمز ہسپتال منتقل کیا جائے گا۔

’بظاہر دہشت گردی نہیں لگتی‘

چیئرمین پی آئی اے اعظم سہگل نے کہا ہے کہ چونکہ طیارے کے پائلٹ نے حادثے سے قبل مے ڈے کی کال دی تھی اس لیے بظاہر یہ دہشت گردی کا واقعہ نہیں لگتا۔ 

انھوں نے کہا کہ بلیک باکس مل گیا ہے جسے طیارہ ساز کمپنی کو بھیجا جائے گا جس سے اصل وجوہات کا پتہ چل سکے گا۔

’پرواز سے پہلے طیارے میں کوئی فنی خرابی نہیں تھی‘

چیئرمین پی آئی اے اعظم سہگل نے منگل کی شب اسلام آباد کے ہوائی اڈے پر ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پرواز سے پہلے طیارے میں کوئی فنی خرابی نہیں تھی تاہم حادثے کی اصل وجوہات کا اندازہ تحقیقات کے بعد ہی ہو سکے گا۔

انھوں نے ماضی میں جہاز کی خرابی اور مرمت کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ جہاز خراب ہوتے رہتے ہیں لیکن ان کی مرمت کی جاتی ہے۔

انھوں نے فنی خرابی کے باوجود طیارے کو پرواز کی اجازت دینے کی تردید کی اور کہا کہ ہم ایسا سوچ بھی نہیں سکتے۔

40 لاشیں ہسپتال منتقل

پاکستانی فوج کا کہنا ہے کہ جائے حادثہ سے 40 لاشیں ایبٹ آباد کے ایوب میڈیکل ہسپتال منتقل کر دی گئی ہیں۔ فوج کے مطابق امدادی آپریشن میں 500 فوجی جوان شریک ہیں جبکہ 8 آرمی ڈاکٹر، 52 پیرامیڈک سٹاف آمددی آپریشن میں حصہ لے رہے ہیں۔

پاکستان میں امریکی سفیر نے مسافر طیارے کے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

جائے وقوعہ کے قریب موجود بی بی سی کے نامہ نگار ذیشان ظفر نے بتایا کہ عینی شاہدین کے مطابق جہاز کے ملبے میں ابھی تک آگ لگی ہوئی ہے اور لاشوں کو شناخت کے لیے ایوب میڈیکل ہسپتال ایبٹ آباد منتقل کیا جا رہا ہے۔

ہمارے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ جائے وقوعہ تک پہچنے کے لیے راستہ بہت دشوار گزار اور تنگ ہے اور کئی جگہوں پر ٹریفک جام ہے۔

’لاشوں کی شناخت ڈی این اے ٹیسٹ کے بغیر ممکن نہیں‘

ایبٹ آباد میڈیکل کملپکس کے ڈاکٹر عبدالمنان نے کہا ہے کہ جائے حادثہ سے ملنے والی میتیں ناقابل شناخت ہیں ان کی شناخت ڈی این اے ٹیسٹ کے بغیر ممکن نہیں ہے۔ 

انھوں نے ایبٹ آباد سے بی بی سی کے نامہ نگار عزیز اللہ خان کو ٹیلیفون پر بتایا کہ انھیں چادروں میں لپٹی لاشیں ملی ہیں اور سب کی سب جلی ہوئی ہیں، اور یہ بھی معلوم نہیں ہو رہا کہ ان کے جسم کے کون کون سے حصے کہاں ہیں۔ 

ڈاکٹر فضل منان نے کہا کہ اسلام آباد سے قومی رجسٹریشن کے ادارے نادرا کی ٹیمیں پہنچ رہی ہیں جو ان میتوں کی شناخت میں مدد فراہم کریں گی۔

انھوں نے کہا کہ ان لاشوں کو ڈی این اے ٹیسٹ کے ذریعے شناخت کیا جا سکے گا جس کے بعد انھیں لواحقین کے حوالے کیا جائے گا۔

 انھوں نے کہا کہ اب سے تھوڑی دیر پہلے تک ان کی پاس دس لاشیں پہنچی تھیں جو سب کی سب چادروں میں لپٹی ہوئی ہیں۔

مسخ شدہ لاشیں

بی بی سی کے طاہر عمران کے مطابق حادثے کی جگہ سے آنے والے امدادی کارکنوں کا کہنا ہے کہ مسافروں کی لاشیں بری طرح مسخ شدہ ہیں اور ان میں سے اب تک جلنے کی بو آرہی ہے

search and rescue operation
ISPR

امدادی آپریشن

امدادی کارروائیاں
ISPR
فوج کے امدادی دستے جائے حادثہ پر امدادی آپریشن میں مصروف ہیں
اسلام آباد ایئرپورٹ پر لواحقین
BBC

جنید جمشید کی رہائش گاہ کا منظر

طیارے کے حادثے کی اطلاعات اور اس میں جنید جمشید کے سوار ہونے کی خبر نشر ہونے کے بعد کراچی کےعلاقے ڈیفنس میں واقع ان کے گھر پر رشتے داروں اور دوستوں کی آمد جاری رہی۔

تعزیت کے لیے آنے والوں میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے۔

ہمارے نامہ نگار ریاض سہیل نے بتایا کہ گھر کے باہر دو درجن سے زائد صحافی اور فوٹو گرافر بھی موجود تھے لیکن خاندان کے کسی فرد نے بھی بات کرنے سے انکار کردیا۔

کچھ دیر بعد گھر کے اندر سے آنے والے ایک شخص نے کہا کہ بعض چینل غلط خبر چلا رہے ہیں کہ سعید انور اور سہیل خان یہاں موجود ہیں۔ 

نید جمشید کی اہلیہ کے بارے میں سوال پر انھوں نے کہا کہ وہ بھی اندر موجود ہیں تاہم جب ان سے یہ پوچھا گیا کہ ان کی کتنی اہلیائیں ہیں تو انھوں نے کہا کہ جنید بھائی چلے گئے ہیں یہ سوال نہ کیا جائے۔

سڑک پر لوگوں کی آمد کے بعد رینجرز کے کچھ جوانوں اور پولیس اہلکار بھی تعینات کر دیے گئے ہیں جبکہ گھر کے باہر شامیانہ لگایا جا رہا ہے۔

کراچی
EPA

نقشہ
BBC

جہاز بنانے والی کمپنی اے ٹی آر نے پی آئی اے کے کریش ہونے والے مسافر جہاز PK 661 کے بارے میں بیان جاری کیا ہے اور حادثے میں ہلاک ہونے والے افراد کے اہلخانہ کے ساتھ دکھ کا اظہار کیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ حادثے کا شکار ہونے والا جہاز کا سیریل نمبر 663 ہے۔

ATR
ATR

بریکنگجائے حادثہ سے 36 لاشیں برآمد

 پاکستانی فوج کے شعبۂ تعلقاتِ عامہ کا کہنا ہے کہ جائے حادثہ سے 36 لاشیں برآمد کر لی گئی ہیں۔ فوج کے مطابق امدادی آپریشن میں 500 فوجی اہلکار مصروف ہیں جن میں ڈاکٹر اور امدادی کارکن بھی شامل ہیں۔   

جائے حادثہ
EPA

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن کا طیارہ پی کے 661 حویلیاں کے قریب سدھا بتولنی نامی گاؤں کے قریب گر کر تباہ ہوا۔ پاکستانی فوج نے جائے حادثہ پر ٹیمیں روانہ کر دی ہیں جنھوں نے گاؤں کے لوگوں کے ساتھ مل کر کچھ دیر قبل 26 لاشیں برآمد کر لی تھیں۔

فوج
Zubair

خبر کا انتظار

نامہ نگار شمائلہ خان کے مطابق ہوائی اڈے پر حادثے کا شکار ہونے والے طیارے کے مسافروں کے لواحقین کی آمد کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔

لواحقین
BBC

اسلام آباد ایئرپورٹ پر لواحقین کی آمد جاری

اسلام آباد کا ہوائی اڈہ
AP

بریکنگجائے حادثہ سے 26 لاشیں برآمد

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ جائے حادثہ سے اب تک 26 لاشیں برآمد کی جا چکی ہیں۔  

حادثے پر افسوس

پاکستان میں یورپی یونین کے سفیر نے پی آئی اے کے حادثے پر دکھ کا اظہار کیا ہے۔

View more on twitter

’جہاز دور دراز دشوار گزار علاقے میں گرا‘

جائے حادثہ کے قریب رہنے والا ایک شخص اور مقامی پولیس اہلکار نے امدادی سرگرمیوں کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ جہاز دور دراز دشوار گزار علاقے میں گرا۔

’علاقہ دشوار گزار ہے‘

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے چترال سے اسلام آباد آنے والے طیارہ کے حادثے پر غم اور دکھ کا اظہار کیا ہے۔

بلاول
Getty Images

بریکنگتباہ ہونے والے طیارے پر 48 افراد سوار تھے

  • پی آئی اے نے پرواز نمبر PK661 کی حویلیاں کے نزدیک تباہی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ طیارہ شام چار بج کر بیالیس منٹ پر گرا۔
  • طیارہ سدھا بتولنی نامی گاؤں کے قریب گر کر تباہ ہوا۔
  • بیان میں بتایا گیا ہے کہ طیارے پر 48 افراد سوار تھے تاہم اس حادثے کی کوئی وجہ بیان نہیں کی گئی ہے۔
  • پی آئی اے کا کہنا ہے کہ جائے حادثہ پر امدادی آپریشن جاری ہے اور جانی نقصان کا اندازہ لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ جائے حادثہ سے اب تک 21 لاشیں برآمد کی جا چکی ہیں۔

پاکستان تحریکِ انصاف کے رہنما عمران خان نے جہاز کے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے

View more on twitter

لاشوں کی شناخت کے لیے موبائل بایو میٹرک ٹیمیں روانہ

  • نیشنل ایمرجنسی آپریشن سنٹر کے مطابق اب تک جائے حادثہ سے چھ لاشیں تحصیل ہسپتال حویلیاں لائی گئی ہیں۔
  • این ڈی ایم اے نے قدرتی آفات سے نمٹنے کے صوبائی ادارے اور ضلعی انتظامیہ کو تمام لاشیں شناخت کے عمل کے لیے ایک ہی ہسپتال پہنچانے کا حکم دیا ہے۔
  • ترجمان پی ڈی ایم اے خیبر پختونخوا کے مطابق تمام لاشیں حویلیاں ہسپتال سے ایوب میڈیکل کالج منتقل کیا جائے گا، جہاں پی ڈی ایم اے کی جانب سے سہولت سینٹر قائم کیا جا رہا ہے۔
  • لاشوں کی شناخت کے لیے موبائل بایومیٹرک ٹیمیں حویلیاں روانہ کر دی گئی ہیں جہاں سے لاشیں بائیو میٹرک شناخت کے بعد ورثا کے حوالے کی جائیں گی۔

لاشوں کی منتقلی

پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ حادثے کی جگہ سے چھ لاشیں نکالی گئی ہیں جنھیں حویلیاں اور ایوب میڈیکل کالج منتقل کیا گیا ہے۔

karachi
BBC
میڈیا کی گاڑیوں کی بڑی تعداد بھی جنید جمشید کی رہائش گاہ کے باہر موجود ہے