لندن اولمپکس سے واپسی پر پرجوش استقبال

آخری وقت اشاعت:  بدھ 15 اگست 2012 ,‭ 12:35 GMT 17:35 PST
  • برازیل کی ٹیم لندن اولمپکس میں شرکت کے بعد جب وطن واپس پہنچی تو ان کے پاس جیتے گئے پندرہ تمغوں کے علاوہ کچھ اضافی اور خاص یعنی اولمپک کا پرچم بھی تھا۔ برازیل کا شہر ریو ڈی جنیرو اولمپکس دو ہزار سولہ کا میزبان ہے۔ برازیل کی ٹیم کے ساتھ سفر کرنے والے ریو شہر کے میئر نے وطن واپسی پر جہاز سے باہر نکل کر اولمپک پرچم لہرایا۔
  • نیدرلینڈ کی ٹیم کا وطن واپسی پر پرتپاک استقبال کیا گیا جس کے لیے گولڈ میڈل کی شکل کا سٹیج بنایا گیا تھا
  • فرانس کے کھلاڑی نکولا کیرابیٹک نے ہینڈ بال مقابلوں میں اپنے ملک کی نمائندگی کی تھی۔ پیرس میں شائقین کی ایک بڑی تعداد نے ان کا استقبال کیا۔
  • اولمپکس میں افغانستان کے تائی كوانڈو کھلاڑی روح اللہ نكپائي نے کانسی کا تمعہ حاصل کیا۔ وطن کا نام روشن کرنے پر شائقین نے ان کا بھرپور استقبال کیا۔افغانستان نے اولمپکس میں صرف ایک تمغہ حاصل کیا۔
  • روس کی ٹیم مقابلوں میں شرکت کے بعد ملک کے وزیر کھیل کے ہمراہ ماسکو کے ائر پورٹ پر پہنچی۔روسی دستے نے چوبیس طلائی تمغوں سمیت کل بیاسی تمغے جیتے اور چوتھی پوزیشن پر رہا۔
  • قزاقستان کی اولمپکس مقابلوں میں کارکردگی بہتر رہی اور اس نے سات طلائی تمغے جیتے، جن میں سے چار ویٹ لیفٹنگ میں تھے، وطن واپسی پر ٹیم جب الماتے کے ائر پورٹ پر پہنچی تو شائقین کی ایک بڑی تعداد ان کے استقبال کے لیے جمع تھی۔
  • میزبان ملک برطانیہ کی ٹیم برطانیہ انتیس طلائی تمغوں کے ساتھ تیسری پوزیشن پر رہی اور اس کو واپسی کے لیے کوئی طویل سفر نہیں کرنا پڑا، ان کے اعزاز میں یارکشائر میں لیڈز کے مقام پر تقریب کا اہتمام کیا گیا۔
  • قطر کے حکمران کے بیٹے شیخ جان بن حماد بن خلیفہ ال تھانی نے اولمپکس مقابلوں میں کانسی کا تمغہ حاصل کرنے والے دو کھلاڑیوں کا استقبال کیا، قطر مقابلوں میں دو ہی تمغے حاصل کر سکا۔
  • جنوبی افریقہ کے تیراک نے بٹر فلائی مقابلوں میں طلائی تمغہ حاصل کیا اور ان کے ملک نے انہیں بڑے انعام سے بھی نوازا، چاڈ لی کلاس کو چوہتر ہزار ڈالر کا انعام دیا گیا۔
  • بھارتی باکسر میری کوم نے کانسی کا تمغہ جیتا، وطن واپسی پر ایک تقریب میں اپنے دو بچوں کی ساتھ شریک ہوئیں اور روایتی رقص بھی کیا۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔