بھارت کی بچیاں، تصویری نمائش

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 13 اکتوبر 2012 ,‭ 12:54 GMT 17:54 PST

بچیوں کی حالت

  • گرل چائلڈ
    دلی میں نظر فاؤنڈیشن نے بچوں کی تنظیم کرائی کے تعاون سے بھارت میں بچیوں کی حالت پر ایک نمائش لگائی ہے۔ ممبئی میں بانس پر کرتب دکھاتی اس لڑکی کی تصویر کیتکی سیٹھ نے لی ہے۔
  • گرل چائلڈ
    بہار کی پس ماندہ موسہر ذات کی اس بچی کی تصویر سدھاکر اولوے نے لی ہے۔ یہ اس ذات کی وہ خوش قسمت لڑکی ہے جسے سکول جانے کا موقع ملا ہے۔
  • گرل چائلڈ
    رگھورائے کی یہ تصویر کولکاتہ کے فٹ پاتھ کی ہے جس میں ایک بچی اپنی بہن کوسلا رہی ہے جبکہ اس کی ماں تھک کے سو چکی ہے۔
  • گرل چائلڈ
    سات سالہ دولہا دلہن پریم کنور اور کمل سنگھ کی یہ تصویر مدھیہ پردیش کی ہے جسے سوپن پاریکھ نے لیا ہے۔
  • گرل چائلڈ
    یہ تصویر راجستھان کے ایک گاؤں کی تیرہ سالہ شبنم کی ہے جس نے شادی کے بعد سکول جانا چھوڑ دیا۔ جب وہ پندرہ سال کی ہو جائے گی تو اس کی رخصتی کر دی جائے گی۔ یہ تصویر مانسی مدھا نے لی ہے۔
  • گرل چائلڈ
    دلی کے فٹ پاتھ پر غبارے فروخت کرتی ایک لڑکی کی تصویر دنیش کھنّہ نے لی ہے۔
  • گرل چائلڈ
    ایشیا کے سب سے بڑے بازار حسن ممبئی کے کمتھی پورہ میں جنسی پیشہ سے منسلک ایک دوشیزہ کی تصویر فوزان حسین نے لی ہے۔
  • گرل چائلڈ
    جھارکھنڈ کی ایک کوئلہ کی کان میں کام کرنے والی لڑکی کی تصویر سوزانے لی نے لی ہے۔ عام طور پر انتہائی کم اجرت پر لڑکیاں یہاں کام کرتی ہیں اور انہیں سکول نصیب نہیں ہوتا۔
  • گرل چائلڈ
    سنجیو سیٹھ نے اس لڑکی کی تصویر آندھر پردیش میں لی ہے جو کہ بھیڑوں کی دیکھ بھال کرتی ہے۔
  • گرل چائلڈ
    جھاڑو دینے والی اس لڑکی کی تصویر امت شرما نے لی ہے۔
  • گرل چائلڈ
    آٹھ سالہ مسکان کی یہ تصویر انشیکا ورما نے لی ہے ۔ اسے گھریلو کام کے لیے تعلیم کو خیر باد کہنا پڑا ہے۔
  • گرل چائلڈ
    یہ تصویر آسام میں لی گئی۔ اس میں سوپن نائک نے دو لڑکیوں کی پانی ڈھوتے ہوئے دکھایا ہے۔
  • گرل چائلڈ
    مغربی بنگال میں بھارت۔بنگلہ دیش سرحد پر یہ تصویر پرشانت پنجیار نے لی ہے۔ یہاں بچیاں گھر پر ہی رہتی ہیں سکول بہت کم ہیں۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔