’بی بی سی معاملات کو قابو میں لانے کی ضرورت‘

آخری وقت اشاعت:  پير 12 نومبر 2012 ,‭ 09:24 GMT 14:24 PST

خبروں کے شعبے میں قیادت کے بارے میں ابہام کو ختم کرنے کے لیے واضح پالیسی مرتب کی ہے: قائم مقام ڈی جی

بی بی سی کے قائم مقام ڈائریکٹر جنرل ٹم ڈیوی نے بی بی سی کے معاملات کو قابو میں لانے کا عزم کیا ہے۔

ٹم ڈیوی نے اتوار کے روز بی بی سی کے ڈائریکٹر جنرل کے استعفے کے بعد ڈائریکٹر جنرل کا عہدہ سنبھالا ہے۔

قائمقام ڈی جی ٹم ڈیوی نے بی بی سی ملازمین کو ایک پیغام میں کہا کہ انہوں نے لارڈ پیٹن کے کہنے پر یہ عہدہ سنبھالا ہے۔

اس سے قبل بی بی سی کی ڈائریکٹر نیوز ہیلن بوڈن اور ان کے نائب سٹیو مچل نے ایک اندرونی جائزے کی تکمیل تک اپنے عہدے سے الگ ہونے کا اعلان کیا ہے۔

نئے ڈائریکٹر جنرل نے کہا کہ انہوں نے خبروں کے شعبے میں قیادت کے بارے میں ابہام کو ختم کرنے کے لیے واضح پالیسی مرتب کی ہے۔

نئے ڈائریکٹر جنرل نے مستعفی ہونے والے ڈائریکٹر جنرل اینٹ وسل کو پورے سال کی تنخواہ کے بارے میں کہا ہے کہ اس معاملے کا اختیار بی بی سی ٹرسٹ کو حاصل ہے۔

اینٹ وسل ڈائریکٹر جنرل کے عہدے پر فائز رہنے کے صرف آٹھ ہفتے بعد نیوز نائٹ پروگرام میں کنزرویٹو پارٹی کے ایک رکن پر بچوں سے زیادتی کا غلط الزام عائد کیے جانے کے بعد اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے تھے۔

وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون کی طرف سے سابق ڈائریکٹر جنرل کو دی جانے والی رقم پر تنقید کے بعد بی بی سی ٹرسٹ کے چیئرمین لارڈ پیٹن نے دارالعوام کی کلچر اور میڈیا کمیٹی کو ایک خط میں سابق ڈائریکٹر جنرل کو پورے سال کی تنخواہ کی ادائیگی کا دفاع کیا ہے۔

لارڈ پیٹن کا انکشاف

لارڈ پیٹن نےانکشاف کیا ہے کہ اگر سابق ڈائریکٹر جنرل اپنے عہدے سے استعفیٰ نہ دیتے تو بی بی سی ٹرسٹ ان کو عہدے سے برخاست کرنے کا سوچ رہا تھا۔انہوں نے مزید کہا کہ وہ بہترین برطانوی تخلیق کاری کو برطانوی شائقین تک پہنچانے کی راہ میں حائل تمام رکاوٹوں کو دور کرنے کی کوشش کریں گے۔

لارڈ پیٹن نے کمیٹی کو لکھا کہ اگر بی بی سی ٹرسٹ ڈائریکٹر جنرل کو برطرف کیا جاتا تو اس صورت میں بھی یہ رقم ادا کرنی پڑتی تھی۔

لارڈ پیٹن نےانکشاف کیا ہے کہ اگر سابق ڈائریکٹر جنرل اپنے عہدے سے استعفیٰ نہ دیتے تو بی بی سی ٹرسٹ ان کو عہدے سے برخاست کرنے کا سوچ رہا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ بہترین برطانوی تخلیق کاری کو برطانوی شائقین تک پہنچانے کی راہ میں حائل تمام رکاوٹوں کو دور کرنے کی کوشش کریں گے۔

نیوز نائٹ پروگرام میں کنزرویٹو پارٹی کے ایک رکن لارڈ میک الپائن پر بچوں سے زیادتی کا غلط الزام عائد کیا گیا تھا جس کی وجہ سے بی بی سی کے ڈائریکٹر جارج اینٹ وسل سنیچر کو مستعفی ہو گئے۔

اس سے پہلے سے ہی بی بی سی اس معاملے کی چھان بین کر رہی ہے کہ کیسے نیوز نائٹ کے جمی سیول کے بارے میں ایک پروگرام کو نشر ہونے سے روکا گیا تھا۔

جس وقت یہ فیصلہ کیا گیا تھا اس وقت جارج اینٹ وسل بی بی سی وژن کے ڈائریکٹر تھے اور ہیلن بوڈن بی بی سی کی ڈائریکٹر نیوز تھیں۔

ان تحقیقات میں سے ایک کی سربراہی سکائی نیوز کے سربراہ نک پولارڈ کر رہے ہیں جو اس بات کا جائزہ لیں گے کہ نیوز نائٹ کا جمی سیول کے بارے میں پروگرام روک کیوں دیا گیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔