امریکی ریاستوں میں شدید برفانی طوفان

آخری وقت اشاعت:  اتوار 10 فروری 2013 ,‭ 20:21 GMT 01:21 PST

امریکہ میں شدید برفانی طوفان

  • امریکی ریاست نیو انگلینڈ میں شدید برف باری کے باوجود زندگی کسی نہ کسی صورت میں رواں رہی۔
  • اس طوفان کے دوران برفانی ہوائیں جن کی رفتار ایک سو بیس کلومیٹر فی گھنٹہ ہو گی امریکہ کے شمالی مشرقی علاقوں میں چلیں۔
  • لوگوں کو خبردار کیا گیا تھا کہ وہ سڑکوں پر نہ نکلیں اور خوراک اور دوسری اشیاء زخیرہ کر کے رکھیں۔ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ پچیس ملین افراد اس طوفان سے متاثر ہوں گے۔
  • نیو یارک شہر میں بارہ انچ تک برف گرنے کی پیش گوئی تھی جس کی وجہ سے نیو یارک کے سالانہ فیشن ویک کی تقریبات شدید متاثر ہوئی ہیں۔
  • نیو یارک کے مئیر مائیکل بلوم برگ نے کہا کہ ان کے شہر کے پاس سینکڑوں برف ہٹانے والی گاڑیاں اور ڈھائی لاکھ ٹن نمک موجود ہے جو کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے کافی ہو گا۔
  • برفانی طوفان کی وجہ سے امریکہ بھر میں ہزاروں پروازیں منسوخ کر دی گئیں اور اب مزید پروازوں کی منسوخی کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔
  • امریکی ریاست میسا چوسٹس کے شہر بوسٹن میں تین فٹ تک برف باری ہوئی جو کہ سابقہ تمام ریکارڈز سے زیادہ ہے۔
  • مختلف شہروں میں جہاں برف کا طوفان گزر چکا ہے شہری انتظامیہ مسلسل برف ہٹانے کے کام میں مصروف ہے تاکہ زندگی معمول پر واپس آ سکے۔
  • ایک برف سی ڈھکی سڑک کے دونوں اطراف برف سے اٹی گاڑیاں بتاتی ہیں کہ کتنی برف باری ہو چکی ہے۔
  • برف باری کے بعد جیسے ہی سورج نکلا لوگ برف پر کھیل کا سازوسامان لے کر بچوں کے ساتھ نکل آئے جیسا کہ نیو یارک شہر میں اس پارک میں بڑی تعداد میں لوگ تفریح کے لیے آئے ہیں۔
  • برف باری میں جیسے ہی کچھ کمی آئی شہری انتظامیہ برف ہٹانے کے کام میں جتی نظر آئی ہے جیسا کہ یہ برف ہٹانے والی مشین کام میں مصروف نظر آ رہی ہے۔
  • اس گاڑی کی چھت پر لدی ہوئی برف سے اندازہ لگانا آسان ہے کہ کس قدر برف گر چکی ہے۔
  • نیو یارک کے بروکلین کے علاقے میں بھی بچے بڑے برف سے لطف اندوز ہونے نکلے ہیں۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔