بچوں کے پروگرام خواب ہو گئے

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 14 فروری 2013 ,‭ 11:12 GMT 16:12 PST

میڈیا پلئیر

اقوامِ متحدہ کے ادارہ برائے تہذیب و ثقافت کی ایک رپورٹ کے مطابق 2012 میں ترقی پذیر ممالک میں 75 فیصد گھروں میں ریڈیو موجود ہے۔

سنئیےmp3

اس مواد کو دیکھنے/سننے کے لیے جاوا سکرپٹ آن اور تازہ ترین فلیش پلیئر نصب ہونا چاہئیے

متبادل میڈیا پلیئر چلائیں

یوں تو ریڈیو کے عالمی دن کا ابتدا زیادہ پرانا نہیں، اقوام متحدہ نے 2011 میں پہلی بار 13 فروری کو ریڈیو کے عالمی دن سے منسوب کیا لیکن ریڈیو اور سامع کا ساتھ بہت پرانا اور دیرپا سمجھا جاتا ہے۔ اقوامِ متحدہ کے ادارہ برائے تہذیب و ثقافت کی ایک رپورٹ کے مطابق 2012 میں ترقی پذیر ممالک میں 75 فیصد گھروں میں ریڈیو موجود ہے۔

پاکستان کی بات کریں تو سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ملک بھر نجی شعبے میں 106 لائسنس یافتہ ریڈیو سٹیشنز ہیں، ان میں سے 94 کے قریب کام کر رہے ہیں اور باقی بھی جلد ہی اپنی نشریات کا آغاز کر دیں گے۔

ان تمام ریڈیو چینلز پر ہر قسم کی خبریں، تجزیے اور موسیقی کے پروگرام پیش کیے جاتے ہیں جو ملک میں بسنے والے ہر طبقے اور شعبے کے لوگوں کی ضرورت طبع کو پورا کرتے ہیں ۔۔ لیکن ملک بھر میں ریڈیو کی نشریات میں بچوں کے لیے کیا ہو رہا ہے؟

اس رپورٹ میں ریڈیو کے عالمی دن کے موقع پر بی بی سی کی نخبت ملک نے یہی جاننے کی کوشش کی ہے۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔