برما میں نسلی فسادات

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 23 مارچ 2013 ,‭ 01:12 GMT 06:12 PST

برما میں نسلی فسادات

  • برما کے قصبے میکتیلا میں بکھری ہوئی لاشیں۔ میکتیلا دارالحکومت ینگون سے 550 کلومیٹر دور ہے۔ مسلمان اس علاقے میں میکتلا مائنچن ہائی وے پر رہتے ہیں۔
  • 22 مارچ سے اس علاقے میں پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ہے۔
  • بلوہ پولیس 22 مارچ کو میکتیلا میں مسلمانوں اور بدھوں کے درمیان ہونے والے بلوے کے موقعے پر اکٹھی ہو رہی ہے۔
  • 21 مارچ کو لی گئی اس تصویر میں فائر بریگیڈ فسادات کے بعد عمارتوں میں لگی آگ کو بجھانے کی کوشش کر رہی ہے۔
  • 22 مارچ کو جب فسادات کے دوران پولیس اور کچھ بدھ بھکشو انھیں بچانے کے لیے آئے تو بعض مسلمان گھروں سے نکل آئے۔
  • 22 مارچ کو پولیس ایک سڑک پر نگرانی کر رہی ہے۔
  • پولیس میکتیلا میں داخل ہونے والے لوگوں کو ایک چوکی پر روک رہی ہے۔
  • ایک آدمی میکتیلا کی ایک سڑک پر چل رہا ہے۔ یہاں فسادات کے بعد کرفیو لگا دیا گیا تھا۔
  • بلوائیوں نے بہت سی عمارتوں کو نذرِ آتش کر دیا۔
  • ایک مسجد بھی بلوائیوں کا نشانہ بنی۔
  • میکتیلا میں جلتی ہوئی عمارتوں سے سیاہ دھواں نکل رہا ہے۔
  • میکتیلا میں ایک جلا ہوا گھر۔
  • ایک ٹرک کو بھی نقصان پہنچایاگیا۔

ملٹی میڈیا

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔