اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پیر انتیس اپریل کا سیربین، حصۂ اول

پاکستان پیپلز پارٹی کے ناقدین کہتے ہیں کہ گزشتہ پانچ سالہ دورِ اقتدارمیں صوبۂ سندھ ميں بھي پارٹی کي کارکردگي اچھي نہيں رہي۔ محرومیوں کا شکار کئي کارکن يا تو مايوس ہيں يا اپني سياسي ترجيحات تبديل کر رہے ہيں۔ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ اِس صورتحال سے پیپلز پارٹی کے مخالفین نے فائدہ اٹھایا ہے جس کی وجہ سے آئندہ انتخابات میں شاید پيپلز پارٹي کو سندھ ميں مشکلات کا سامنا ہو۔ ليکن بعض لوگوں کا خيال ہے کہ بھٹو خاندان سے سندھ کے لوگوں کا رشتہ سياسي سے زيادہ روحاني ہے۔

اِسي کا جائزہ ليا ہے نامہ نگار صبا اعتزاز نے اپنی رپورٹ میں۔

اِسي موضوع پر مزيد بات کرنے کے ليے سٹوڈيو ميں موجود تھے بي بي سي اردو سروس کے ثقلين امام۔

اس کے بعد دیکھیے سوشل میڈیا پر آنے والی آپ کی آراء۔