اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

بدھ پندرہ مئی کا سیربین، حصۂ اول

پاکستان ميں ہونے والے انتخابات کے بارے ميں زيادہ تر مبصرين کا خيال ہے کہ يہ مجموعي طور پر شفاف رہے۔ تاہم دھاندلي کے الزامات اور ان کے خلاف احتجاج بھي سامنے آئے ہيں۔ کراچي ميں مبينہ دھاندليوں کے خلاف مظاہرے ہوئے ہيں اور بلوچستان ميں قوم پرست جماعتوں نے انتخابات کے غير منصفانہ ہونے کا الزام لگايا ہے۔

ہيومن رائٹس کميشن آف پاکستان جمعرات کو انتخابات پر اپني رپورٹ جاري کر رہا ہے اور اسی حوالے سے ايچ آر سي پي کي چئير پرسن زہرا يوسف کے ساتھ خصوصی بات چیت بھی اسی حصے میں شامل ہے۔ مگر اس سے پہلے ديکھیے ارم عباسی کی یہ رپورٹ جس میں جائزہ لیا گیا کہ بلوچستان میں ووٹرز ٹرن اراؤنڈ کیوں کم رہا۔

آخر میں دیکھیے کہ انتخابات کے بعد دھاندلیوں کے الزامات کوئی نئی بات نہیں، لیکن حالیہ انتخابات سے پہلے امیدوار اور ان کے حمایتی ان کا حل الیکشن کمیشن اور انتخابی ٹربیونل سے چاہتے تھے، اس بار سیاسی جماعتیں اس کو سڑکوں پر لے آئیں ہیں۔ کئی حلقوں میں سیاسی جماعتیں دوسری کسی جماعت کا مینڈیٹ تسلیم کرنے کو تیار نہیں ہیں۔

دیکھیے کراچی سے ریاض سہیل کی رپورٹ۔

سب سے آخر میں دیکھیے سوشل میڈیا پر آنے والی آپ کی آراء۔