پیر یکم جولائی کا سیربین

پیر یکم جولائی کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر نشر کیا گیا تھا۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو ایکسپریس نیوز پر نشر ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ سیربین بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر لائیو نشر کیا جاتا ہے۔

بم حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی بیواؤں کی مشکلات

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پاکستان میں تشدد اور بم حملے معمول بن گئے ہیں۔ ان حملوں میں مرنے والوں کے لواحقین کے لیے، خاص کر بم حملوں میں ہلاک ہونے والوں کي بیواؤں کے ليے خود اپنا گزارا کرنا بھی مشکل ہو جاتا ہے۔ پانچ برس قبل صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع چارسدہ کے شیرپاؤ گاؤں میں ایک مسجد میں ہونے والے خود کش حملے میں سو سے زیادہ افراد ہلاک ہوئے تھےـ ہماری ساتھی عنبر شمسی نے کچھ عرصہ قبل شیرپاؤ گاؤں کا دورہ کیا جہاں میڈیا کو رسائی کم ملتی ہے۔

کوئٹہ بم دھماکے

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

کوئٹہ میں بم دھماکے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تدفین کا عمل مکمل ہو گیا ہے۔ دھماکے کے نتيجے میں اب تک تیس افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ زخمی ہونے والوں میں سے بیشتر کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔ واقعے کي تحقیقات کے لیے کوئٹہ میں پولیس کی چھ رکنی ٹیم تشکیل دے دی گئي ہے۔ نامہ نگار ارم عباسی کی رپورٹ

ڈرون حملوں کے خلاف فنکاروں کی آواز

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پاکستان میں ڈرون حملوں، شدت پسندی اور دہشت گردی کے خلاف مختلف طبقہِ فکر کے لوگوں نے آواز اٹھائی ہے لیکن اب فائن آرٹس کے طالب علموں نے بھی اِن حساس موضوعات پر اپني تحقیقی نمائش کی ہے۔ اِس نمائش میں کیا کچھ پیش کیا گیا؟ عزیزاللہ خان کی اس پورٹ میں

سعودی عرب میں غیر ملکی کارکن

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

سعودي عرب کي حکومت ملک میں بے روزگاري ختم کرنے کے ليے ايک نيا قانون نافذ کر رہی ہے۔ اس قانون کا براہ راست اثر غير ملکي کارکنوں پر پڑے گا جن میں انڈيا اور پاکستان سے تعلق رکھنے والوں کي بھي ايک بڑي تعداد شامل ہے۔سعودي عرب میں پانچ لاکھ سے زيادہ لوگوں نے ملک چھوڑنے کي درخواست دي ہے جن میں ايک بڑي تعداد پاکستانی کارکنوں کی ہے۔ اس کي وجہ سے ملک بھيجے جانے والے زرمبادلہ ميں بھي کمی ہونے کا خدشہ ہے۔ خالد کرامت کي رپورٹ