اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

جمعہ دو اگست کا سیربین، حصۂ اول

پاکستان تحريکِ انصاف کے سربراہ عمران خان توہينِ عدالت کے نوٹس پر سپريم کورٹ ميں پيش ہوئے ہیں اور اپنا تحريري جواب جمع کرايا۔ عدالت نے ان کا جواب مسترد کرتے ہوئے انہيں تفصيلي جواب جمع کرانے کے لیے مہلت دي ہے۔

کچھ برسوں سے پاکستان میں توہینِ عدالت میں اظہارِ وجوہ کے نوٹس جاری ہونے کے سلسلے میں تیزی آئي ہے۔ دو وزرائے اعظم، متعدد وزيروں سميت کئي سیاست دانوں اور سرکاری ملازمین کو نوٹس جاری کیے گئے۔ کچھ برسوں ميں سپريم کورٹ نے لگ بھگ ایک ہزار توہین عدالت کے نوٹسز جاری کیے ہیں۔ اتنی بڑی تعداد میں نوٹس جاری ہونے پر سول سوسائٹی میں تشویش پائی جاتی ہے۔ اسلام آباد سے شہزاد ملک کی رپورٹ

اسي بارے ميں مزيد بات کرنے کے ليے اس وقت ہمارے ساتھ لاہور سٹوڈيو سے موجود ہیں وکيل اور تجزيہ کار اسد جمال۔