بدھ دو اکتوبر کا سیربین

بدھ دو اکتوبر کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر لائیو نشر کیا جاتا ہے۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر بھی نشر کیا گیا تھا۔

بلوچستان میں فوجی امدادی ٹیموں پر حملے

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں بلوچ مزاحمت کاروں نے آج پانچ حملے کیے ہیں، جن میں دو فوجي ہلاک اور تین زخمی ہوئے ہیں۔ گزشتہ نو دنوں میں گیارہ حملے ہوچکے ہیں۔پاکستاني فوج کہتي ہے کہ وہ امدادی کارروائيوں میں مصروف ہے جبکہ بلوچ عسکریت پسند کہتے ہيں کہ فورسز ان کے خلاف پیش قدمی کر رہی ہیں۔اس کشیدہ صورتحال میں عام متاثرین کو کن مشکلات کا سامنا ہے؟ مشکے سے ریاض سہیل کی رپورٹ۔

ہمارے نامہ نگار شاہ زيب جيلاني بھي بلوچستان کے زلزلے سے متاثرہ علاقوں کو اپني آنکھوں سے ديکھ کر آئے ہیں۔ اب سے کچھ دير پہلے ميں نے ان سے پوچھا کہ کن علاقوں ميں امداد نہيں پہنچ پا رہي اور کيا امداد نہ پہنچنے کي وجہ صرف فوج اور بلوچ عسکريت پسندوں کا تنازع ہي ہے؟

يہاں سوال يہ ہے کہ فوج اور عسکريت پسندوں کے درميان کشيدگي کے مد نظر، زلزلہ سے متاثرہ علاقوں ميں امداد پہنچانے کا کام کيا صرف مکمل طور پر فوج کو ديا جانا چاہيے تھا؟ ميں نے يہي سوال اب سے کچھ دير پہلے اخبار ڈيلي ٹائمز کے ايڈيٹر راشد رحمان سے کيا۔

یونان کی گولڈن ڈان پارٹی اور گرین پیس

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

یونان میں انتہا پسند جماعت گولڈن ڈان پارٹی کے تین ارکانِ پارلیمان کو ضمانت پر رہا کر دیا گیا۔ ان افراد پر جرائم پیشہ گروپ تشکیل دینے کا الزام ہے۔ آمريت کے مخالف ایک موسیقار کی انتہا پسند جماعت کے کارکن کے ہاتھوں ہلاکت کے بعد، ان افراد کو گزشتہ سنیچر کو گرفتار کیا گیا تھا۔ پوليس کے بقول اِن لوگوں کے خلاف ثبوت کافي نہيں لہٰذا انہيں مقدمے کے دورانِ حراست ميں نہيں رکھا جا سکتا۔

ماحوليات دوست تنظيم گرین پیس کے پانچ کارکنوں پر روس میں قزاقی کی فردِ جرم عائد کر دی گئی ہے۔ یہ افراد گرین پیس کے اُن تیس کارکنوں میں سے تھے جو آرک ٹک میں کھدائی کے خلاف احتجاج کر رہے تھے۔احتجاج کے دوران ان کارکنوں نے تیل کی کھدائی کی تنصیبات پر چڑھنے کی کوشش کی۔ یہ تنصیبات روس کی سرکاری کمپنی گیزپروم کی ملکیت ہیں۔

برما کی مغربی ریاست رخائن کے ایک گاؤں پر انتہا پسند بودھوں کے حملے میں پانچ مسلمان ہلاک ہوئے ہیں۔ پولیس کے بقول ہلاک شدگان میں چورانوے برس کی ایک خاتون بھی شامل ہیں۔ یہ حملہ ایک ایسے وقت کیا گیا ہے جب ملک کے صدر تھان سین اسی علاقے کا دورہ کر رہے ہیں۔

اٹلی کے وزیراعظم اینریکو لیتا نے سینیٹ میں اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا ہے۔ ملک کے سابق وزیراعظم سلویو برلسکونی نے بھی آج حکومت کی حمایت کا اعلان کر دیا۔ جبکہ اِس سے پہلے مسٹر برلسکونی نے حکومت گرانے کی کوششوں کے سلسلے ميں پارلیمان میں اپنے ارکان سے کہا تھا کہ حکومت کے خلاف ووٹ دیں۔

برطانیہ میں سن دو ہزار گیارہ کی مردم شماری کے جائزے سے یہ دلچسپ بات سامنے آئی ہے کہ ساٹھ سال سے زيادہ عمر کے لوگوں کے مقابلے ميں کام کرنے کی عمر والے لوگ اپني شناخت برطانوی بتاتے ہيں۔ اعداد و شمار کے مطابق پچھتر برس سے زیادہ عمر کے صرف تیرہ فیصد جبکہ سفيد فام صرف چودہ فیصد خود کو برطانوی کہلوانا پسند کرتے ہيں۔ بی بی سی کے نامہ نگار مارک ایسٹن کی رپورٹ

امریکہ شٹ ڈاؤن

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

امریکہ میں وفاقی حکومت بحران جاري ہے، وفاقي حکومت جزوي طور پربند پڑي ہے۔ صدر اوباما نے ریپبلیکنز کو کہا ہے کہ وہ ملک کو یرغمال بنانا بند کریں، بجٹ کو منظور کریں اور حکومت کو کام کرنے دیں۔ امریکہ میں وفاقی حکومت کی سرگرمیاں پیر اور منگل کی درمیانی شب اس وقت جزوی طور پر معطل ہو گئی تھیں جب حزبِ اختلاف کی اکثریت والے ایوانِ نمائندگان سے آئندہ مالی سال کا بجٹ منظور نہ ہونے کے بعد وائٹ ہاؤس نے کچھ وفاقی محکموں کو کام بند کرنے کے احکامات جاری کیے تھے۔

جو محکمے اور ایجنسیاں سب سے زیادہ متاثر ہوئیں ان میں میوزیم، گیلریاں اور چڑیا گھر شامل ہے۔ جن محکموں سے سب سے زیادہ عملہ متاثر ہوا ہے ان میں محکمۂ دفاع ، محکمۂ تجارت توانائی کا محکمہ اور ٹرانسپورٹ کا محکمہ شامل ہے۔ واشنگٹن سے برجيش اوپادھيائے۔

امريکہ ميں شٹ ڈاؤن ابھي آپ نے برجيش اپادھيائے کي رپورٹ سني۔ ادھر امریکی صدر براک اوباما نے کہا ہے کہ ملک میں وفاقی محکموں کی بندش کے خاتمے کے لیے حزب اختلاف کی جانب سے ہیلتھ کیئر کے قانون میں تبدیلی کی شرط تسلیم نہیں کی جا سکتی۔ اس وقت واشنگٹن سٹوڈيوز سے ہمارے نامہ نگار برجيش اپادھيائے ہمارے ساتھ براہ راست موجود ہيں۔

سارا کام ہنسی ہنسی میں

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

آئس لينڈ کي ايک خاتون نے ايک نيا نظام تعليم متعارف کرايا ہے، ايسے بچوں کے ليے جو آساني سے نہ سيکھ سکتے ہيں اور نہ پڑھ لکھ سکتے ہيں۔ اس نظام ميں کمپيوٹر کوڈنگ کي مدد لي گئي ہے جس کے بعد بچے کھيل ہي کھيل ميں نہ صرف خود سيکھتے ہيں بلکہ اپنے دوسرے ساتھيوں کو سکھاتے بھي ہيں۔ اور يہ سارا کام ہنسي ہنسي ميں ہو جاتا ہے۔ اسے کہتے ہيں آم کے آم گٹھليوں کے دام۔ ٹيکنالوجي کي دنيا سے تازہ ترين خبروں کے ساتھ کلک پيش کررہي ہيں نوشين عباس۔

اسی بارے میں