کے پی کے پولیس
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

خیرپختونخوا میں پولیس نشانے پر

وزیرستان آپریشن کے شروع ہونے کے بعد خیبر پختونخوا میں گزشتہ ایک ماہ میں شدت پسندوں کے حملوں میں بارہ سے زیادہ پولیس اہلکار ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ گزشتہ بارہ سالوں میں ان کی تعداد گیارہ سو سے زیادہ ہے۔ پشاور سمیت صوبے میں اب بیشتر اہم چوکیاں تھانے اور چوراہے بم دھماکوں اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں ہلاک ہونے والے پولیس افسران اور اہلکاروں کے نام سے منسوب کر دیے گئے ہیں۔ پشاور سے تفصیل کے ساتھ نامہ نگار عزیزاللہ خان