اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

’نہ قاتل پکڑے گئے نہ تحقیقات ہو رہی ہیں‘

دنیا بھر میں صحافیوں کے تحفظ کے لیے کام کرنے والی تنظمیووں نے پہلی مرتبہ صحافیوں کے خلاف جرائم میں ملوث افراد کو انصاف کے کٹھرے تک لانے کے لیے اتوار کو عالمی دن منایا۔ پاکستان میں بھی میڈیا سے منسلک نو افراد محض اس سال اب تک قتل کیے جاچکے ہیں۔ لیکن آج تک ماسوائے ایک آدھ واقعے کے کسی صحافی کے قاتل کو سزا نہیں دلوائی جاسکی ہے۔ اسلام آباد میں ہمارے ساتھی ہارون رشید نے دو ہزار گیارہ میں اغوا اور بعد میں ہلاک کیے جانے والے صحافی سلیم شہزاد کے برادر نسبتی حمزہ امیر سے بات کی اور پہلے پوچھا کہ کیا انہیں انصاف مل پایا ہے؟