اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

بھارت میں’مسلمان خواتین کو امتيازي سلوک کا سامنا‘

بھارت میں مسلمانوں کے شادی اور طلاق جیسے اہم معاملات ’مسلم برسنل لا‘ کے برسوں پرانے قوانین کے تحت طے پاتے ہیں۔ طلاق اور شادی جیسے اہم معاملات کے لیے بھی کوئی متفقہ قانون نہ ہونے کے سبب مسلم معاشرے میں خواتین کو امتيازي سلوک کا سامنا ہے۔ دوسری شادي کے لیے پہلی بیوی کو چھوڑنے جیسے معاملات میں بھی مسلم خواتین کو کوئي قانونی تحفظ حاصل نہیں ہے۔ لیکن مسلم خواتین اب یہ مطالبہ کر رہی ہیں کہ جاگیردارانہ دور کے ’مسلم پرسنل لا‘ میں تبدیلی کی جائے اور ‏زبانی طلاق پر پابندی لگائی جائے۔ ديکھيے دہلی سے ہمارے نامہ نگار شکیل اختر کی رپورٹ۔