ابوبشیر
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

موریطانیہ میں شامی پناہ گزين کی کہانی

خانہ جنگي سے بچنے کے لیے شامی لوگوں نے دنیا کے مختلف ممالک میں پناہ لی ہے۔ لیکن ايک جگہ جہاں شامی لوگ جا کر بسے ہیں اور اُس کا ذکر سب سے کم ہوتا ہے، وہ ہے مغربی افریقہ کا ملک موریطانيہ۔ موریطانيہ جانے کے لیے شامی شہریوں کو ویزا کی ضرورت نہیں ہوتی اور اُنہیں یہ بھی امید رہتی ہے کہ وہاں سے وہ سمگلروں کی مدد سے صحرائے صحارا کے راستے یورپ بھی جا سکتے ہیں۔ بی بی سی کے نامہ نگار ٹامس فیسی نے ایک ایسے ہی شامی خاندان سے ملاقات کی۔ ابوبشیر کی کہانی پيش کر رہے ہیں راجہ ذوالفقار علی۔