پاکستان اور آسٹریلیا کا ورلڈ ٹی ٹوئٹنی میں اہم مقابلہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان ٹیم مایوسی کا شکار ہے

مایوسی کا شکار پاکستانی کرکٹ ٹیم ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں اپنا آخری گروپ میچ آج آسٹریلیا کے خلاف کھیل رہی ہے۔

بھارت اور نیوزی لینڈ کے ہاتھوں شکست کے بعد پاکستانی ٹیم کی سیمی فائنل میں پہنچنے کی دم توڑتی ہوئی امیدوں کا انحصار اب اس بات پر ہے کہ وہ آسٹریلیا کو بھاری مارجن سے شکست دے اور پھر 27 مارچ کو آسٹریلوی ٹیم بھارت کو ہرائے۔

پاکستانی ٹیم کو ایک بڑا دھچکہ بنگلہ دیش کی بھارت کے ہاتھوں شکست کی صورت میں لگ چکا ہے۔

اگر بنگلہ دیش کی ٹیم بھارت کو ہرا دیتی تو پاکستانی ٹیم کو اس کا فائدہ ہوتا۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم لگاتار تینوں میچز جیت کر پہلے ہی سیمی فائنل میں پہنچ چکی ہے۔اس کا آخری میچ ہفتے کے روز بنگلہ دیش کے خلاف کولکتہ میں ہے۔

بھارت کے تین میچوں میں چار پوائنٹس ہیں جبکہ پاکستان اور آسٹریلیا کے دو دو پوائنٹس ہیں اور ان دونوں کا رن ریٹ بھارت سے اچھا ہے۔

پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان 13 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلے جا چکے ہیں جن میں سے سات پاکستان اور پانچ آسٹریلیا جیتا ہے۔ ایک میچ ٹائی ہوا جو پاکستان نے سپر اوور میں جیتا۔

ورلڈ ٹی ٹوئنٹی مقابلوں میں دونوں ٹیمیں پانچ بار مدِ مقابل آ چکی ہیں جن میں سے پاکستان نے تین میچز جیتے ہیں۔

  • سنہ 2007 میں پاکستان نے آسٹریلیا کو چھ وکٹوں سے شکست دی تھی۔
  • سنہ 2010 میں آسٹریلیا نے پاکستان کو پہلے گروپ میچ میں 43 رنز سے اور پھر سیمی فائنل میں تین وکٹوں سے ہرایا تھا۔
  • سنہ 2012 میں پاکستان نے آسٹریلیا کے خلاف 32 رنز سے کامیابی حاصل کی ۔
  • سنہ 2014 میں بھی بازی پاکستان نے سولہ رنز سے اپنے نام کی۔

اسی بارے میں