کین ولیئمسن اپنے دور کے بہترین کھلاڑی: وزڈن کرکٹ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ نیوزی لینڈ کے دو کھلاڑیوں کو اس فہرست میں شامل کیا گیا ہو۔

نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیئمسن کو وزڈن کرکٹ کا بہترین کھلاڑی ہونے کا اعزاز دیا ہے اور ان کے بارے میں لکھا ہے کہ ولیئمسن نے خود کو اپنے وقت کا بہترین کھلاڑی منوایا ہے۔

وزڈن کرکٹ کے پانچ بہترین کھلاڑیوں میں کین ولیئمسن کا نام سرِ فہرست ہے جبکہ دوسرے کھلاڑیوں میں انگلش آل رونڈر بین سٹوکس، آسٹریلوی کپتان سٹیون سمتھ، انگلش وکٹ کیپر بیٹسمین جانی بیئرسٹو اور نیوزی لینڈ کے سابق کپتان برینڈن مککلم بھی شامل ہیں۔

وہ ان پانچ کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں جنھیں کرکٹ جریدے وزڈن کرکٹ کے ’کرکرٹرز آف دی ایئر‘ کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔

نیوزی لینڈ کے کپتان ولیئمسن نے 2015 میں 2692 رنز بنائے۔ آسٹریلیا کے کپتان سٹیون سمتھ اور نیوزی لینڈ کے برینڈن میککلم کا نام بھی ان پانچ کھلاڑیوں میں شامل ہے۔

ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ نیوزی لینڈ کے دو کھلاڑیوں کو اس فہرست میں شامل کیا گیا ہو۔

نیوزی لینڈ کے سابق کپتان برینڈن میککلم نے، جو کہ اس سال فروری میں انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائر ہوگئے تھے، آسٹریلیا کے خلاف کرائسٹ چرچ میں ٹیسٹ کرکٹ کی تیز ترین سنچری سکور کی۔ انھوں نے 54 گیندوں پر 100 رن بنائے۔

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کی طرف سے کھیلنے والے بین سٹوکس اور جانی بیرسٹو کا نام بھی اس فہرست میں شامل ہے۔

24 سالہ آل راؤنڈر سٹوکس کا نام حالیہ میچوں میں اچھی کارکردگی کے بعد شامل کیا گیا جس میں ان کی وہ اننگز بھی شامل ہے جس میں انھوں نے کیپ ٹاؤن میں جنوبی افریقہ کے خلاف 198 گیندوں پر 258 رن بنائے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بین سٹوکز کو ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹی ٹوئینٹی ورلڈ کپ کے فائنل میں آخری اوور میں چار گیندوں پر چار چھکے پڑے تھے

ان کی اس اننگز میں ان کا ساتھ جانی بیرسٹو نے دیا اور دونوں بیٹسمینوں نے چھٹی وکٹ کی شراکت میں 399 رنز بنائے جو ٹیسٹ کرکٹ میں ایک ریکاڈ ہے۔ اس اننگز میں بیرسٹو نے اپنی پہلی ٹیسٹ سنچری بنائی۔

جبکہ 29 سالہ بیرسٹو نے یارکشائر کاؤنٹی چیمپیئن شپ میں 1108 رنزبنائے اور انگلینڈ کی ایشز سیریز جیتنے میں بھی مدد کی۔

یاد رہے کہ ڈرہم کی طرف سے کھیلنے والے بین سٹوکس کو ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے فائنل میں آخری اوور میں چار گیندوں پر چار چھکے پڑے تھے جس کے بعد انگلینڈ یہ میچ ہار گیا تھا۔

بین سٹوکس نے گزشتہ سال مئی میں نیوزی لینڈ کے خلاف85 گیندوں پر سنچری بنائی۔ یہ، لارڈز کرکٹ گراؤنڈ میں کسی بھی بیٹسمین کی طرف سے تیز ترین سنچری ہے۔

بیرسٹو نے بی بی سی سپورٹ کو بتایا کہ ’یہ بین کی طرف سے ایک شاندار اننگز تھی اور ہم دونوں نے ایک دوسرے کو اس پر سراہا۔‘

دوسری طرف نیوزی لینڈ کی خواتین کرکٹ ٹیم کی کپتان سوزی بیٹس کو دنیا کی بہترین خاتون کرکٹر کا اعزاز دیا گیا ہے۔انھوں نے فروری میں انگلینڈ کے خلاف اپنی چھٹی ون ڈے سنچری سکور کی تھی۔

1889 میں شروع کیے گئے یہ ایوارڈ وزڈن کرکٹ کے سالانہ جریدے وزڈن کرکٹ المینیک کا مرکزی جزو ہیں۔ اس جریدے کا 153واں ایڈیشن جمعرات کو شائع کیا جائے گا۔