’ٹرمپ کو تنقید سننے کی برداشت رکھنی چاہیے‘

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

عراق میں ہلاک ہونے والے امریکی مسلمان آرمی کیپٹن ہمایوں خان کے والدین کا کہنا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کو تنقید سننے کی برداشت رکھنی چاہیے۔

بی بی سی اردو کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں خضر خان نے کہا کہ ’ہم تار کین وطن ہیں۔ جب ڈونلڈ ٹرمپ نے مسلمانوں پر حملہ شروع کیا تو اس وقت خیال آیا کہ ہم اس مقام پر ہیں کہ یہ کہہ سکیں کہ ہم حب وطن مسلمان ہیں۔ تو جب وہ الفاظ منہ سے نکلے وہ لوگوں کے دلوں کو لگے۔‘

٭ ’ڈونلڈ ٹرمپ قربانی کا مطلب نہیں جانتے‘

٭ ’ٹرمپ، تم نے قربانی نہیں دی‘

جب خضر خان سے پوچھا گیا کہ آج کل ٹی وی پر ان کا ذکر لگاتار کیا جا رہا ہے اور ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹویٹس کے ذریعے بھی ان پر خاصا غصہ نکالا ہے تو انھوں نے کہا ’ٹرمپ کے لیے میرا یہ پیغام ہے کہ میں ان سے براہ راست مخاطب نہیں ہوں۔ دوسرا یہ ہے کہ ایک قوم کے رہنما میں اتنی گنجائش ہونی چاہیے کہ وہ تنقید کو برداشت کر سکیں۔‘

Image caption خضر اور غزالا خان نے بی بی سی اردو کے ساتھ خصوصی بات چیت کی ہے

جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا وہ ٹرمپ سے معافی چاہتے ہیں تو خضر خان نے مزید کہا کہ ’معافی کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ ہم معافی سے بڑی پوزیشن پر بیٹھے ہیں۔ ہم ’گولڈ سٹار‘ فیملی ہیں جسے یہ قوم بہت بڑے مقام پر بٹھاتی ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ٹرمپ نے کچھ ٹویٹس کے ذریعے خضر خان پر تنقید کی تھی

خضر خان کی اہلیہ غزالہ خان سے پوچھا گیا کہ جب ٹرمپ نے ٹویٹ کیا تھا کہ وہ ڈیموکریٹک کنونشن کے سٹیج پر خاموش کھڑی تھیں اور شاید انھیں بولنے نہیں دیا گیا اور یہ بھی کہ اسلام میں ایسا ہوتا ہے، تو انھوں نے کہا ’اس وقت سارے امریکہ نے میرے جذبات محسوس کیے تھے۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے میری تکلیف نہیں دیکھی، میری خاموشی دیکھی۔ میرے بیٹے کی تصویر پیچھے لگی ہوئی ہے اور مجھ سے کہتے ہیں کہ بات کرو کھڑی ہو کر؟ میرے میں ہمت نہیں تھی۔ جو کچھ بھی میرے شوہر کہہ رہے تھے وہ میری آواز بھی تھی۔‘

انھوں نے اپنے بیٹے ہمایوں خان کے بارے میں کہا کہ جب وہ فوج میں بھرتی ہونے جا رہے تھے تو انھوں نے اسے روکنے کی کوشش کی تھی۔ ’میں تو نہیں برداشت کر سکتی تھی لیکن اس نے ہنس کر کہا کہ اسے آرمی کا ڈسیپلن بہت پسند ہے۔‘

جب دونوں والدین سے پوچھا گیا کہ ان کی تقریر کے بعد ان پر تنقید کی جا رہی ہے تو خضر خان نے کہا ’ظاہر ہے جب آپ کسی پر تنقید کرتے ہیں تو اس کا حق بھی ہے کہ وہ آپ پر تنقید کرے۔ لیکن فرق صرف اتنا ہے کہ میں کسی آفس کے لیے امیدوار نہیں ہوں۔ جو آفس کے لیے امیدوار ہوتے ہیں ان کی ذہنیت زیادہ بڑی ہونی چاہیے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption عراق میں ہلاک ہونے والے مسلمان فوجی ہمایوں خان کے والدین نے بی بی سی اردو سے بات کی

یاد رہے کہ امریکہ کے صدارتی انتخاب میں رپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے یہ خدشہ ظاہر کیاتھا کہ نومبر میں ہونے والے الیکشن میں دھاندلی ہو سکتی ہے۔

اس سے پہلے ڈونلڈ ٹرمپ نے اپني ایک حالیہ تقرير میں ڈیموکریٹ پارٹی کی امیدوار اور اپنی حریف ہلری کلنٹن کو 'شیطان' قرار دیا۔

اسی بارے میں