بلوچستان ٹریننگ کالج میں ہلاک ہونے پولیس اہلکاروں کی یاد میں شمعیں روشن

Image caption تقریب میں وزیر اعلیٰ بلوچستان نواب ثنا اللہ زہری، سینئیر صوبائی وزیر ڈاکٹر حامد خان اچکزئی، پاکستانی فوج کے جنوبی کمان کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض اور دیگر حکام نے شرکت کی

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں واقع پولیس ٹریننگ کالج پر شدت پسندوں کے حملے میں ہلاک ہونے والے پولیس کے 60 اہلکاروں کی یاد میں شمعیں روشن کی گئیں۔

پولیس اہلکاروں کو یاد کرنے کے لیے شمعیں روشن کرنے کی تقریب مشن چوک پر منعقد کی گئی۔

تقریب میں وزیر اعلیٰ بلوچستان نواب ثنا اللہ زہری، سینئیر صوبائی وزیر ڈاکٹر حامد خان اچکزئی، پاکستانی فوج کے جنوبی کمان کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض اور دیگر حکام نے شرکت کی۔

پولیس ٹریننگ کالج سانحہ: تین پولیس افسر معطل

پولیس ٹریننگ کالج میں سکیورٹی کی صورتحال مثالی نہیں تھی: انوار الحق کاکڑ

کوئٹہ: پولیس کے تربیتی مرکز پر حملے میں 61 اہلکار ہلاک، 124 زخمی

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نواب ثنا اللہ زہری نے کہا کہ ہمارے دشمن ہمیں شام اور عراق بنا نا چاہتے تھے لیکن ہم نے ان کے عزائم کو ناکام بنا دیا۔

Image caption پولیس اہلکاروں کو یاد کرنے کے لیے شمعیں روشن کرنے کی تقریب مشن چوک پر منعقد کی گئی

کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض نے کہا کہ جس نے بھی یہ کام کیا ہے ہم ان ذمہ داروں تک ضرور پہنچیں گے۔

انھوں نے کہا 'ہمارے دشمنوں نے پاکستان کے خلاف جنگ کا اعلان کیا ہے۔ دہلی میں جو تقریریں کی گئیں اور بلوچستان کے بارے میں جو باتیں کی گئیں اس کے بعد اس حوالے سے کسی کو شک نہیں ہونا چاہیے۔'

کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل عامر کا کہنا تھا ’میں کھل کر بات کرتا ہوں کہ ہمارے کچھ لوگ دشمن کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں ۔ بہت سارے بہکے ہوئے ہیں اور بہت سارے بکے ہوئے ہیں۔‘

اسی بارے میں